نئے سال پرمودی کا پیغام؛ٹیکس چور جہاں بھی جائیں پکڑے جائیںگے

0
20

نئی دہلی،یکم جنوری(پی ایس آئی) نریندر مودی حکومت ٹیکس چوروں کے پیچھے پڑ گئی ہے. نئے سال میں ٹیکس چوروں کو حکومت کا واضح پیغام ہے- کوئی فرق نہیں پڑتا کہ آپ کتنا دور تک بھاگتے ہیں، ہم آپ کو پکڑ ہی لیں گے. اس کے لئے حکومت بگ ڈیٹا کا سہارا لے رہی، لیکن جب اس سے بھی مکمل اطمینان نہیں ملا تو اس نے ٹیکس چوروں کا پتہ لگانے کے قوانین ہی بدل دیے.نئے قوانین سے ٹیکس حکام کو بینکاری، انشورنس اور مقامی اداروں میں جمع کئے گئے اعداد و شمار کا استعمال ٹیکس چوروں کا پتہ لگانے میں کرنے کا حق مل گیا ہے. ابھی چھپا یا لاپتہ ٹیکس چوروں کو ان ایڈریس پر انکم ٹیکس نوٹس بھیج کر ان سے ٹیکس ڈیمانڈ کی جا سکے گی. اب تک ٹیکس اتھارٹیج کو ٹےکسپےیر کی جانب سے مہیا کرائے گئے پرمانےٹ اکاو¿نٹ نمبر (پین)، انکم ٹیکس ریٹرن (آئی ٹی آر) میں درج ایڈریس یا دیگر ٹیکس رلےٹےڈ کمیونکےشن پر ہی نوٹس جاری کر سکتے تھے. اس سے ٹیکس حکام کو ان ٹیکس چوروں کو نوٹس بھیجنے میں مدد نہیں ملتی تھی جو پتہ بدل لیتے تھے اور پرانے ایڈریس پر بھیجا گیا نوٹس واپس کر دیا جاتا تھا.سامان اینڈ سروسز ٹیکس (جی ایس ٹی) سے متحرک اعداد و شمار کو انکم ٹیکس چھپانے والوں کے خلاف استعمال کرنے کی حکومت کی منصوبہ بندی ٹیکس چوروں کے لئے ایک اور بڑا سر درد ثابت ہونے والا ہے. دراصل، حکومت ایک ڈیٹا بیس تیار کرنا چاہ رہی ہے جس میں کمپنیوں اور ان پرموٹروں کی کمائی کو ان کی طرف سے فائل جی ایس ٹی ریٹرن سے ملایا جا سکے. ایسا پہلی بار ہو گا کہ حکومت انکم ٹیکس فائلنگ کو انڈایرےکٹ ٹیکس اعداد و شمار سے اتنے بڑے پیمانے پر ملان کرے گی. پہلے ٹیکس نظام سے الگ انکم ٹیکس کے اعداد و شمار کا ملان کرنے سے کمپنیوں اور ان پرموٹروں کے لئے اپنی آمدنی کم کرکے یا خرچ بڑھاچڑھاکر بتانا ناممکن ہو جائے گا.