ٹرمپ کے اعلان القدس پر عرب ممالک کا رد عمل بزدلانہ ہے

0
14

مقبوضہ بیت المقدس4جنوری ( آئی این ایس انڈیا ) مسجد اقصیٰ کے خطیب اور سپریم اسلامک کونسل کےچیئرمین الشیخ عکرمہ صبری نے کہا ہے کہ قبلہ اول کو یہودیانے کی اسرائیلی سازشوں اور امریکی اقدامات کے ذمہ دار عرب ممالک ہیں۔ عرب دنیا نے قبلہ اول کے دفاع اور القدس کی ا?زادی کے لیے اپنی ذمہ داریاں کما حقہ ادا نہیں جس کے نتیجے میں فلسطینی قوم اور پوری مسلم امہ کو ا?ج یہ دن دیکھنا پڑے ہیں۔ میڈیا کو دیئے گئے انٹرویو میں الشیخ عکرمہ صبری نے کہا کہ القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کا امریکی اعلان جتنا خطرناک ہے اس کے تناسب سے عرب ممالک کا رد عمل جاندار نہیں۔ عرب ممالک کا رد عمل انتہائی ڈھیلا اور منافقانہ ہے ۔ میرے نزدیک عرب ممالک کے حکمران مسلمانوں کے پہلے قبلہ اورتیسرے حرم کے حوالے سے بہت بڑی غلطیوں کے مرتکب ہو رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پوری تاریخ گواہ ہے کہ بیت المقدس کے ساتھ یہویوں کا کوئی تعلق نہیں رہا۔ یہ شہر ہمیشہ مسلمانوں کا گہوارہ رہا۔ اس کی مشرقی اور مغربی حصوں میں تقسیم بھی بلا جواز ہے۔ قضیہ فلسطین تا قیامت مسلمانوں کا مرکز رہے گا اور یہ آج بھی صرف فلسطینیو ں کا نہیں بلکہ ڈیڑھ ارب مسلمانوں کا مسئلہ ہے۔ اگر کروڑوں برس بھی بیت جاتے ہیں تب بھی القدس کی اسلامی اور عرب حیثیت کوختم نہیں کیا جاسکتا۔شیخ الاقصیٰ نے زور دے کر کہا کہ القدس فلسطینی قوم کا محاذ جنگ ہے اور ہم یہ محاذ نہیں چھوڑیں گے۔ القدس اور الاقصیٰ ہمارے تھے اور ہمار ے ہی رہیں گے۔ایک سوال کے جواب میں الشیخ عکرمہ صبری کا کہنا تھا کہ گذشتہ برس جب اسرائیل نے مسجد اقصیٰ کے باہر الیکٹرانک گیٹس نصب کرنے کی مجرمانہ کوشش کی تو فلسطینی قوم نے جان پر کھیل کر دشمن کی اس سازش کو ناکام بنایا۔ فلسطینی قوم نے ماضی میں بھی اپنا سب کچھ القدس اور قبلہ اول پر نثار کیا ہے۔ آئندہ بھی فلسطینی اس عظیم مقصد کے لیے ہرقربانی دینے کو تیار رہیں گے ۔ الشیخ عکرمہ صبری نے کہا کہ اگر امریکہ کا اعلان القدس نافذ کرنے کی کوشش کی جاتی ہے تو اس کے نتیجے میں فلسطین میں ایک غیرمعمولی تحریک اٹھ کھڑی ہوگی۔ یہ نئی تحریک گذشتہ برس باب الاسباط میں قبلہ اول کے باہر الیکٹرانک گیٹس لگانے کے خلاف اٹھنے والی تحریک سے کہیں زیادہ خطرناک ہوگی۔ الشیخ عکرمہ صبری نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے منحوس اقدام نے مسلمان اور عیسائی برادری کو باہم متحد کردیا ہے۔ عالم اسلام اور عیسائی دنیا کے سامنے القدس کے تاریخی اسٹیٹس کا دفاع ایک بڑا چیلنج ہے اور ہم سب کو مل کر اس چیلنج کا مقابلہ کرنا ہوگا ۔ انہوں نے فلسطینی قوم کے نوجوانوں اور خواتین نے قبلہ اول کا بھرپور دفاع کیا۔ فلسطین کی بہادر بیٹیاں عرب اور مسلمانوں کی جانب سے قبلہ اول کا دفاع کر رہی ہیں ۔الشیخ عکرمہ صبری نے اسلامی تحریک کے امیر الشیخ راید صلاح کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کیا ۔اور کہا کہ اسرائیل ہر اس فلسطینی کو انتقام کا نشانہ بنا رہا ہے جو قبلہ اول کے دفاع کی بات کرتا ہے۔ انہوں نے انسا نی حقوق کے عالمی اداروں سے اپیل کی کہ وہ الشیخ راید صلاح کی صہیونی قید خانے سے رہائی کے لیے صہیونی ریاست پر دباو¿ ڈالیں۔ان عرب ممالک نے اپنا حق ادا نہیں کیا جس کے نتیجے میں فلسطینی قوم اور پوری مسلم امہ کو آج یہ دن دیکھنا پڑے ہیں۔