آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Sports

آئی پی ایل ری ٹینشن میں کیا ‘سرپرائز’ ہوگا

ipl
Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی، 03 جنوری (یواین آئی) معروف انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں ایک مرتبہ پھر دولت کی برسات کا وقت آ گیا ہے اور 2018 میں اس ٹورنامنٹ کے 11 ویں سیشن کے لئے جمعرات کو ری ٹین کئے جانے والے کھلاڑیوں (یعنی دوبارہ اپنی ٹیم میں جگہ حاصل کرنے والے کھلاڑی) میں ‘سرپرائز’ پر سبھی کی نظریں رہیں گی۔ مہندر سنگھ دھونی، وراٹ کوہلی، روہت شرما جیسے بڑے کھلاڑیوں کے لئے تمام کا اندازہ ہے کہ ان کی پرانی ٹیمیں انہیں ری ٹین کرنے میں زیادہ وقت نہیں لگائیں گی لیکن یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ ری ٹینشن میں سرپرائز پیکیج کیا نکلتا ہے ۔ دنیا کی اس سب سے بڑی کرکٹ لیگ کے ری ٹینشن پر صرف ہندوستانیوں کی ہی نہیں بلکہ غیر ملکی کھلاڑیوں کی بھی نظریں رہیں گی۔ آئی پی ایل آپریشن کونسل نے ری ٹینشن کے سلسلے میں اپنی پالیسی سے دسمبر کے شروع میں تمام فرنچائزز ٹیموں کو واضح کر دیا تھا کہ وہ کس طرح اپنے کھلاڑی ری ٹین کر پائیں گی۔ فرنچائز ٹیمیں ابھی رٹینشن اور نیلامی کے دوران رائٹ ٹو میچ (آر ٹی ایم ) کے ذریعے زیادہ سے زیادہ پانچ کھلاڑی رکھ سکتی ہیں۔ اگر نیلامی سے پہلے کوئی ٹیم رٹینشن نہیں رکھتی ہے تو وہ نیلامی میں زیادہ سے زیادہ تین رائٹ ٹو میچ رکھ سکتی ہے ۔ ٹیمیں زیادہ سے زیادہ پانچ کھلاڑی ری ٹین کر پائیں گی جن میں سے زیادہ سے زیادہ تین کیپڈ ہندوستانی کھلاڑی، زیادہ سے زیادہ دو ان کیپڈ ہندوستانی کھلاڑی اور زیادہ سے زیادہ دو غیر ملکی کھلاڑی ہوں گے ۔ زیادہ سے زیادہ تین ری ٹین کھلاڑی نیلامی پول میں نہیں اتریں گے ۔ ٹیموں کو اپنی 2017 کی ٹیم (راجستھان رائلس اور چنئی سپرکنگس کے لئے 2015) میں سے کھلاڑیوں کو رکھنے کا موقع نیلامی کے دوران جہاں وہ رائٹ ٹو میچ (آر ٹیم ایم ) کارڈ استعمال کر کے کھلاڑیوں (زیادہ سے زیادہ تین) کو برقرار رکھ سکیں گی۔ معطلی ہٹنے کے بعد واپسی کر رہی چنئی اور راجستھان کی ٹیمیں 2015 کی اپنی پرانی ٹیموں اور 2017 میں گجرات اور پونے کا حصہ رہے کھلاڑیوں میں سے ری ٹینشن اور رائٹ ٹو میچ کا استعمال کر سکیں گی۔ نیلامی سے پہلے ری ٹین کئے جانے والے تین کھلاڑیوں میں پہلے کھلاڑی کو 15 کروڑ، دوسرے کو 11 کروڑ اور تیسرے کو سات کروڑ روپے ملیں گے ۔اس میں دوسرا آپشن بھی رکھا گیا ہے ۔ اگر دو کھلاڑی ری ٹین کئے جاتے ہیں تو سب سے پہلے کو 12.5 کروڑ اور دوسرے کو 8.5 کروڑ روپے ملیں گے ۔ ایک کھلاڑی کو ری ٹین کئے جانے کی حالت میں اس 12.5 کروڑ روپے ملیں گے ۔ ری ٹین کے لئے امکان: ممبئی انڈینس: ٹورنامنٹ کو تین بار جیت چکی ممبئی کے لئے اس کے کپتان روہت شرما ممکنہ پسند ہوں گے ۔ہٹ مین کے نام سے مشہور روہت نے حال میں اپنی کپتانی میں ہندوستان کو سری لنکا کے خلاف ون ڈے اور ٹوئنٹی – 20 سیریز میں جیت دلائی تھی۔ون ڈے میں تیسری ڈبل سنچری بنانے اور 2017 میں سب سے زیادہ چھکے اڑانے والے روہت کو تو ممبئی کی ٹیم ہر حال میں اپنی ٹیم میں برقرار رکھنے کی کوشش کرے گی۔ اسٹار آل را¶نڈر ہاردک پانڈیا، کرنال پانڈیا، کیرون پولارڈ اور جسپریت بمراہ جیسے کھلاڑیوں کو ممبئی ٹیم یا تو ری ٹینشن یا پھر رائٹ ٹو میچ کارڈ کے ذریعے ٹیم میں برقرار رکھنا چاہے گی۔ ممبئی کا لازمی حصہ رہے ہربھجن سنگھ کا کیا موقع رہے گا یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا۔ چنئی سپر کنگ: معطلی ہٹنے کے دو سال بعد واپسی کر رہی چنئی کی ٹیم کے لئے اس کے آٹھ مرتبہ کے کپتان رہے اور دو بار ٹیم کو فاتح بنا چکے مہندر سنگھ دھونی کی ٹیم میں واپسی طے ہے ۔گزشتہ دو سال دھونی پونے ٹیم کی جانب سے کھیلے تھے لیکن اپنی کی کارکردگی سے وہ ٹیم مالکان کی تنقید کے گھیرے میں رہے تھے ۔ چنئی میں سب سے زیادہ مشہور دھونی کو ریٹین کرنے میں سپر کنگز کو زیادہ محنت نہیں کرنی پڑے گی۔ آ¶ٹ آف فارم سریش رینا پر بھی ٹیم دا¶ کھیل سکتی ہے جو گزشتہ دو سال نئی ٹیم گجرات کے کپتان رہے تھے ۔ ٹورنامنٹ میں رینا کافی اچھی بلے بازی کرتے ہیں ۔ ٹیم کی نظریں رویندر جڈیجہ پر بھی رہیں گی جو ہر معنوں میں آل راونڈ کھلاڑی ہیں۔ چنئی کے نشانے پر نیوزی لینڈ کے برینڈن میک کولم اور ویسٹ انڈیز کے ڈیون براوو بھی رہیں گے لیکن مقامی اسٹار اور آف اسپنر روی چندرن اشون کا کیا ہوگا یہ کہہ پانا مشکل ہے جو ہندوستان کی محدود اووروں کی ٹیم سے باہر چل رہے ہیں۔ رائل چیلنجرز بنگلور: ٹورنامنٹ کی یہ ایک ایسی ٹیم ہے جس میں زیادہ تر اسٹار کھلاڑی رہے لیکن گزشتہ سیشن میں اس نے خراب کارکردگی پیش کی ۔ کپتان وراٹ کوہلی، کرس گیل اور اے بی ڈی ولیرس جیسے بڑے کھلاڑیوں کے باوجود بنگلور کی ٹیم جدوجہد کرتی نظرآئی۔ اس کے باوجود ٹیم ان تینوں کو ڑی ٹین کر سکتی ہے ۔ ٹیم کی نظریں لیگ اسپنر یجویندر چہل پر بھی رہ سکتی ہیں جن کا محدود اووروں میں حالیہ کارکردگی شاندار رہی ہے اور ٹورنامنٹ میں بھی انہوں نے اپنی اسپن کا جادودکھایا ہے ۔ کولکاتا نائٹ رائڈرس: دو بار چیمپئن رہی اس ٹیم کے کپتان گوتم گمبھیر کے سلسلے میں کہا جارہا تھا کہ انہیں ری ٹین نہیں کیا جائے لیکن شاہ رخ خان کی ٹیم کے پاس گمبھیر کے علاوہ کوئی اور دوسرا متبادل نظر نہیں آتا۔ کولکتہ کے لئے ری ٹین کیے جانے والے کھلاڑیوں کی دوڑ میں سنیل نارائن، منیش پانڈے ، کلدیپ یادو اور رابن اتھپا شامل رہیں گے ۔ دہلی ڈیر ڈیولس: دہلی کی ٹیم ہر مرتبہ پیچھے رہ جاتی ہے ۔ دہلی کے لئے یہ بڑا مشکل رہے گا کہ وہ کسے ری ٹین کرے یا پھر وہ نیلامی میں کھلاڑیوں کو خریدنے کا انتظار کرے ۔ دہلی رشبھ پنت، کے گسو ربادا، کوئنٹن ڈی کاک، شریس ایر، سنجو سیمسن اور کرس مورس کے بارے میں خیال کرسکتی ہے ۔

About the author

Taasir Newspaper