آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Uttar Pradesh

کھلے میں گھوم رہے خنزیروں کی وجہ سے عام شہریوں کوتکلیف :ڈی ایم

?
Written by Taasir Newspaper

مین پوری 18 جنوری(حافظ محمد ذاکر )شہر کے علاقوں میں کھلے طور پر گھوم رہے خنزیروں کی وجہ سے عام شہریوں کو کافی تکلیف ہو رہی ہے، جہاں ایک طرف آوارا جانوروں کی وجہ سے شہر کی گلیوں میں گندگی پھیلی رہی ہے ، تووہیں سوروں کی وجہ سے بیماریاں بھی پھیلنے کا خوف ہے، تمام ایگزیکٹیو افسر سور پالکو کوں کو نشان زدہ کر ان کی نشت قائم کریں ، ان سے سختی کے ساتھ جانوروں کو شہری علاقے کے باہر باڑوں میں رکھوانا یقینی کریں ،پانی کی سطح میں اضا فہ کے لئے تمام حلقہ ترقی افسر ایکشن پلان تیار کریں، شہری، دیہی علاقے میں روسٹر کے مطابق بجلی کی فرا ہمی کو یقینی بنائیں ،گا¶ں-گا¶ں کیمپوں کو لاگا کرکے بجلی کا کنکشن منظور کریں ۔ ڈویلپمنٹ نگرانی کمیٹی کے اجلاس کے جائزہ کے دوران ضلع کے مجسٹریٹ پرد یپ کمار نے ہدایات دیں۔انہوں نے عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہو ئے کہا کہ خاص طور پر مین پوری شہر میں سﺅروں کی دہشت ہے، جس کی وجہ سے عام شہری کافی پریشان ہہیں،تمام ایگزیکٹیو افسران اپنے اپنے علا قو ں میں آوارہ جانوروں کو روکنے کے لئے م¶ثر کارروائی کریں،انہوں نے جائزہ لینے کے دوران اپنی ناراضگی کا اظہار کیا اور کہا کہ محکمہ صحت کی طرف سے لاگو کئے گئے منصوبوں کو مناسب طریقے سے چالو نہیں کیا جا رہا ہے ۔ حاملہ خواتین کی نشاندہی کا کام کافی سست ہے ،انہوں نے کوشل وکاس ترقی مشن سکیم کواعلیٰ سطح پر تشہیر کرا کر زیادہ سے زیادہ تعلیم یافتہ نوجوانوں کا رجسٹرڈ کرانے کا حکم دیا،انہوں نے صاف بھارت مشن کے تحت شہری، دیہی علا قے میں کھلے میں رفع حاجت سے آزاد کرانے کی سست پیش رفت پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے ضلع پنچایت راج افسر، ایگزیکٹیو افسر شہر ادار و ں کو ہدایت دی کہ وہ اس سمت میں تیزی سے کام کریں ،اور جتنی جلدی ممکن ہو ہر گا¶ں، وارڈوں پر او ڈی ایف،انہوں نے ضلع سماجی بہبود افسر، ضلع پسماندہ طبقے بہبود افسر کو ہدایت کی کہ وہ ہر تحصیل، ترقیاتی بلاک سطح سے پنشن حاصل کر رہے مستفیضوں کی توثیقی رپورٹ حاصل کریں، اور جن مستفیضوں کی موت ہو گئی ہو ان کے نام فوری طور پر فہرست سے قلم زد کئے جائیں ۔،اجلاس میں اہم ترقی افسر وجے کمار گپتا، چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر اروند کمار گپتا، ضلع ترقیاتی افسر جے ،اےن کریل، پروجیکٹ ڈائریکٹر، ایس ،سی،مشر سمیت دیگر متعلقہ حکام موجود تھے۔

About the author

Taasir Newspaper