کھیل

کرناٹک بنا گھریلو ون ڈے کرکٹ کا بادشاہ

Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی، 27 فروری (یو این آئی) زبردست فارم میں چل رہے اوپن مینک اگروال (90) کی ایک اور بہترین اننگز اور آف اسپنر کرشپا گوتم (27 رن پر تین وکٹ) کی بہترین کارکردگی سے کرناٹک نے سوراشٹر کو منگل کو یہاں فیروز شاہ کوٹلہ میدان میں 41 رن سے شکست دے کر تیسری بار وجے ہزارے ٹرافی ون ڈے کرکٹ ٹورنامنٹ جیت لیا۔ کرناٹک نے 45.5 اوور میں 253 رن کا مشکل اسکور بنایا۔ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے سوراشٹر نے اپنے آٹھ وکٹ صرف 135 رن تک گنوا دیے ۔لیکن ہندوستانی ٹیسٹ بلے باز اور کپتان چتیشور پجارا نے 94 رنز کی اننگز کھیل کر سوراشٹر کی توقعات کو برقرار رکھا۔پجارا جب اپنی سنچری سے چھ رن دور تھے تو وہ حریف کپتان کر ونا نائر کے تھرو پر رن آ¶ٹ ہو گئے ۔ پجارا کے آ¶ٹ ہوتے ہی سوراشٹر کی امیدیں ٹوٹ گئی اور ٹیم 46.3 اوور میں 212 رن پر محدود ہو گئی۔ کرناٹک نے اس طرح تیسری بار وجے ہزارے ٹرافی جیتنے کا اعزاز حاصل کر لیا۔کرناٹک نے اس سے پہلے 2013۔14 اور 2014۔15 میں ٹرافی جیتی تھی۔سوراشٹر کا اس شکست کے بعد 2007۔08 کے بعد پہلی بار یہ ٹرافی جیتنے کا خواب ٹوٹ گیا۔ سوراشٹر کو اپنے کپتان پجارا سے خاصی امیدیں تھی۔لیکن ٹیم کو ٹاپ آرڈر اور مڈل آرڈر کی ناکامی کافی بھاری پڑ گئی۔سوراشٹر نے دو وکٹ پر 77 رن کی خوشگوار صورتحال سے اپنے اگلے چار وکٹ صرف 24 رن جوڑ کر گنوا دیے ۔سوراشٹر ایک جھٹکے میں چھ وکٹ پر 101 رن کی نازک پوزیشن میں پہنچ گیا۔ سوراشٹر نے اپنا ساتواں وکٹ 134 اور آٹھواں وکٹ 135 رن پر گنوایا۔پجارا نے یکطرفہ جدوجہد کرتے ہوئے 127 گیندوں میں 10 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے شاندار 94 رنز بنائے ۔پجارا نے 10 ویں نمبر کے بلے باز کملیش مکوانا (ناٹ آ¶ٹ 20) کے ساتھ نویں وکٹ کے لئے 65 رن رن کی ساجھے داری کی۔ جب ایسا لگ رہا تھا کہ پجارا میچ کو آخری اوور تک لے جائیں گے کہ تبھی وہ نائر کے ذریعے رن آ¶ٹ کر دیے گئے ۔پجارا کا وکٹ ٹیم کے 200 کے اسکور پر گرا اور 212 رن پر اس کی پوری اننگز سمٹ گئی۔ اوپنر او بروٹ نے 30، دیپک جانی نے 22 اور مکوانا نے ناٹ آ¶ٹ 20 رنز بنائے ۔اسٹار آل را¶نڈر رویندر جڈیجہ 15 رنز ہی بنا سکے ۔تیز گیند باز پرسدھ کرشنا نے ٹاپ تین بلے بازوں میں دو وکٹیں حاصل کیں۔انہوں نے 37 رن پر تین وکٹ لئے ۔گوتم نے 27 رن پر تین وکٹ حاصل کئے جبکہ اسٹیورٹ بنی اور دیش پانڈے کو ایک ایک وکٹ ملا۔ اس سے پہلے مینک نے ایک بار پھر شاندار مظاہرہ کرتے ہوئے صرف 79 گیندوں میں 11 چوکے اور تین چھکے اڑا کر 90 رنز کی اننگز کھیلی اور ٹیم کو دو وکٹ پر پانچ رن کی نازک صورت حال سے نکال لیا۔کپتان کر ونا نائر اور لوکیش راہل کھاتہ کھولے بغیر آ¶ٹ ہوئے ۔لیکن مینک نے زبردست اننگز کھیلی۔ اس سیزن میں تمام فارمیٹ میں 2000 سے زیادہ رنز بنا چکے مینک کا ٹورنامنٹ میں آٹھ اننگز میں یہ ساتواں 80 سے زیادہ کا اسکور تھا۔انہوں نے مہاراشٹر کے خلاف سیمی فائنل میں بھی 86 گیندوں میں 81 رنز بنائے تھے اور فائنل میں 79 گیندوں میں 90 رن بنائے ۔مینک کو مین آف دی میچ کا ایوارڈ ملا۔فاتح ٹرافی جیتتے ہی کرناٹک کے تمام کھلاڑی جشن میں ڈوب گئے ۔ کرناٹک کی تیسری خطابی جیت میں مینک کا سب سے بڑا تعاون رہا۔انہوں نے آٹھ میچوں میں 90.37 کی اوسط اور 107.91 کے اسٹرائک ریٹ سے 723 رن بنائے جس میں تین سنچریاں اور چار نصف سنچری شامل ہیں۔اس کے بعد دوسرے نمبر کے بلے باز کے 390 رنز رہے ۔اسی سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ مینک کی بلے بازی کتنی شاندار رہی۔ مینک نے روی کمار سمرتھ (48) کے ساتھ تیسرے وکٹ کے لئے 136 رن کی ساجھے داری کی۔روی نے 65 گیندوں میں ایک چوکا اور ایک چھکا لگایا۔ دیش پانڈے نے 60 گیندوں میں چار چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 49 اور شریس گوپال نے 28 گیندوں میں چھ چوکوں کے سہارے 31 رن بنا کر کرناٹک کو 253 رنز تک پہنچایا۔کملیش مکوانا نے 8.5 اوور میں 34 رن پر چار وکٹ لئے ۔

About the author

Taasir Newspaper