فائنل میں جگہ پکی کرنے اترے گی ٹیم انڈیا

0
22

کولمبو، 13 مارچ (یو این آئی) میزبان سری لنکا کو گزشتہ مقابلے میں آسانی سے شکست دینے کے بعد اچھی پوزیشن میں دکھائی دے رہی روہت شرما کی کپتانی میں ہندوستانی کرکٹ ٹیم بدھ کو بنگلہ دیش کے خلاف اپنے آخری گروپ مرحلے میچ میں فتح کے ساتھ ندھاس سہ رخی سیریز کے فائنل میں جگہ پکی کرنے اترے گی۔ندھاس ٹوئنٹی 20 سیریز میں اگر موجودہ صورت حال کو دیکھیں تو ہندستان نے اپنے تین میچوں میں دو جیتے ہیں اور وہ چار پوائنٹس کے ساتھ ٹیبل میں سب سے اوپر ہے جبکہ میزبان ٹیم سری لنکا نے تین میچوں میں ایک جیتا ہے اور دو ہارے ہیں جبکہ بنگلہ دیش نے دو میچ کھیلے ہیں جس میں ایک فتح اور ایک شکست کے بعد وہ دو پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے ۔موجودہ صورت حال میں ہندستان کے لیے اپنی فائنل میں جگہ یقینی کرنے کیلئے بنگلہ دیش پر فتح درج کرنا کافی اہم ہوگا کیونکہ اگر اس میچ میں بنگلہ دیش جیت درج کر لیتا ہے اور اگلے میچ میں سری لنکا کی ٹیم بھی اپنا آخری میچ بنگلہ دیش سے جیت جاتی ہے تو نیٹ رن ریٹ کا فائنل ٹیم طے کرنے میں اہم کردار رہے گا۔ ایسے میں الجھے مساوات سے بچنے کیلئے ضروری ہوگا کہ روہت کی نوجوان ٹیم آخری میچ میں جیت سے فائنل کا ٹکٹ پکا کر لے ۔ہندستان نے سری لنکا سے اوپننگ میچ میں پانچ وکٹ سے ہار کھائی تھی لیکن اگلے میچوں میں اس نے بنگلہ دیش سے چھ وکٹ اور پھر سری لنکا سے گزشتہ بارش سے متاثر میچ میں چھ وکٹ سے جیت اپنے نام کر لی۔اگرچہ اگلے میچ میں بنگلہ دیش سے ہندستان کو سخت چیلنج مل سکتا ہے جس نے سری لنکا کے خلاف 215 رنز کے بڑے ہدف کا بھی آسانی سے پیچھا کر لیا تھا۔ وہیں گھریلو ٹیم کی بھی کارکردگی اب تک کافی متاثر کن رہی ہے ۔ بنگلہ دیش کے خلاف گزشتہ میچ میں جیت درج کر چکی ہندوستانی ٹیم آر پریم داسا اسٹیڈیم میں دوبارہ اسی کارکردگی کو دہرانے کی کوشش کرے گی جبکہ مخالف ٹیم پچھلی شکست کا بدلہ برابر کر نے کے ساتھ فائنل کیلئے اپنا دعوی پکا کرنا چاہے گی۔اگرچہ گھریلو ٹیم کے خلاف گزشتہ میچ میں جیت سے ہندستان کا حوصلہ کافی بڑھا ہے ۔اس میچ میں شاردل ٹھاکر کا مظاہرہ قابل تعریف رہا تھا جنہوں نے تجربہ کار بھونیشور کمار اور جسپریت بمراہ جیسے تیز گیند بازوں کی غیر موجودگی میں کافی متاثر کیا۔شاردل نے 27 رن پر سب سے زیادہ چار وکٹ نکالے تھے اور گھریلو ٹیم کو 152 پر روکنے میں مدد کی جو ہندستان کی جیت میں اہم رہا کیونکہ اوپننگ میچ میں سری لنکا ہندستان کے 174 رنز کے بڑے اسکور کا بھی پیچھا کر چکی ہے ۔ مین آف دی میچ شاردل نے بھی مانا کہ ٹیم میں تجربہ کار گیند بازوں کی غیر موجودگی میں ان کے لیے آگے بڑھ کر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ضروری ہے اور وہ رنجی ٹورنامنٹ میں بھی ایسا کر چکے ہیں اور ان کے لیے یہ کسی چیلنج کی طرح ہے ۔شاردل کے علاوہ واشنگٹن سندر ، جے دیو انادکٹ، یجویندر چہل اور وجے شنکر جیسے گیند بازوں کی کارکردگی بھی تسلی بخش رہی۔بنگلہ دیش کے خلاف دوسرے میچ میں بھی بولروں نے کمال کا کھیل دکھاتے ہوئے اسے 139 کے چھوٹے اسکور پر روک دیا تھا ۔
اور انادکٹ اس میچ میں تین وکٹ لے کر سب سے کامیاب رہے تھے ۔گیند بازوں پر اسی کارکردگی کو دہرانے کی ذمہ داری ہو گی۔ گزشتہ میچ میں بلے بازوں میں مڈل آرڈر میں منیش پانڈے اور دنیش کارتک کے درمیان 68 رنز کی ناٹ آ¶ٹ ساجھے داری میچ فاتح ثابت ہوئی اور انہوں نے ثابت کیا کی ٹیم کے پاس مڈل آرڈر میں اچھے بلے باز ہیں۔اگرچہ اوپننگ میں کپتان روہت نے پھر سے مایوس کیا۔ انہوں نے گزشتہ تین میچوں میں 0،17 اور 11 رنز کی اننگز کھیلی ہیں۔امید رہے گی کہ اگلے میچ میں وہ اپنی کارکردگی کو بہتر بنائیں۔ان کے علاوہ شکھر دھون، آل را¶نڈر سریش رینا، لوکیش راہل پر بھی بڑا اسکور بنانے کا دبا¶ ھوگا۔ بنگلہ دیش نے سری لنکا کے خلاف اپنے گزشتہ میچ میں جس طرح 215 رن کے ہدف کو آسانی سے حاصل کر میچ جیتا تھا اس سے ایشیا کی بدلتی اس ٹیم کی مضبوطی کا پتہ چلتا ہے اور ہندستان کو تمیم اقبال، لیٹن داس، سومیہ سرکار ، مشفق الرحیم جیسے بلے بازوں اور مستفیض الرحمن، محموداللہ، تسکین احمد جیسے اس کے مضبوط اور تجربہ کار بولروں سے ہوشیار رہنا ہو گا ۔