سیاست

کٹھوعہ اور اناﺅ معاملے کے خلاف 49 سابق افسران نے وزیراعظم کو خط لکھ کر ناراضگی ظاہر کی

Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی 16اپریل (سیدشمیم احمد): 49سابق افسران نے وزیراعظم نریندر مودی کو ایک سخت خط لکھ کر کہا ہے کہ ہم سابق افسران کے گروپ کا ایک حصہ ہیں۔ جو ہندستانی آئین کے مطابق جمہوری اقدارمیں آرہی گراوٹ پر تشویش کا اظہار کرنے کیلئے گذشتہ سال اکٹھا ہوئے تھے۔ ہم نے پہلے بھی کہا تھا اور پھر کہتے ہیں کہ ہم نہ تو کسی سیاسی پارٹی سے جڑے ہیںاور نہ ہی کسی سیاسی نظریے کوماننے والے ہیں، سوائے ان قدروں کے جن کے تحفظ کی ضمانت آئین میں دی گئی ہے۔ چونکہ آپ نے آئین کی حفاظت کا حلف لیا ہے ، ہم پرامید تھے کہ آپ کی حکومت جس کے آپ سربراہ ہیں اور سیاسی پارٹی جس کے آپ رکن ہیں، اس خطرناک رجحان کانوٹس لیںگے ۔ پھیلتے تعفن کو دور کرنے کیلئے آگے آئیںگے اور سب کو بھروسہ دلائیںگے۔ خاص طور سے اقلیتوں اور کمزور طبقات کو کہ وہ اپنے جان ومال اور اپنی شخصی آزادی کے سلسلے میں بے فکر رہیں۔ لیکن ہماری یہ امید اب ختم ہوگئی ہے۔ اس کے بجائے کٹھوعہ اور اناﺅ کے واقعات کی دہشت یہ ظاہر کرتی ہے کہ انتظامیہ اپنی بنیادی ذمہ داری کو نبھانے میں ناکام ثابت ہوئی ہے اور ایک قوم کے طور پر جسے اپنی اخلاقی اور ثقافتی وراثت پر فخر رہا ہے اور ایک سماج کے طور پر جس نے اپنی رحم دلی ،ہمدردی اور رواداری کے سنبھال کر رکھا ہے۔ ہم سب اس میں ناکام ثابت ہوئے ہیں۔ ہندﺅں کے نام پر ایک انسان کی دوسرے کے خلاف بے رحمی کے مظاہرے سے ہماری انسانیت شرمسار ہے۔ ایک 8 سال کی بچی کی وحشیانہ عصمت دری اور قتل کا واقعہ ، ہمیں یہ بتاتا ہے کہ ہم گھٹیاپن کے کن گہرائیوں میں گر چکے ہیں۔ آزادی کے بعد یہ ہمارا سب سے بڑا اندھیر ہے۔ جس میں ہم کہ ہماری حکومت اور ہماری سیاسی پارٹیوں کی قیادت کار دعمل ناکافی اور ڈھیلا ڈھالا ہے۔ اس مقام پر ہمیں اندھیری سرنگ کے آخری سرے پربھی کوئی روشنی نہیں دکھائی دیتی ہے اور ہم بس شرم سے اپنا سر جھکاتے ہیں۔ ہماری شرم اس وقت اور بڑھ جاتی ہے جب ہم پاتے ہیں ہمارے ہی کچھ نوجوان ساتھی جوحکومت میں ہیں خاص کر وہ جو ضلعوں میں کام کررہے ہیں قانوناََ دلت اور کمزور لوگوں کی دیکھ بھال کیلئے پابند عہد ہیں، اپنے فرض کو نبھانے میں ناکام ہیں۔ اپنے مکتوب میں انہوں نے کہا کہ لکھا ہے کہ پردھان منتری جی ہم یہ خط محض اپنی اجتماعی شرم اور درد کے اظہار کیلئے نہیں لکھ رہے ہیں۔ بلکہ ہم اس کے ذریعہ اپنی ناراضگی کا اظہار کرنا چاہتے ہیں۔ بانٹنے اور نفرت پھیلانے کے ایجنڈے کے خلاف اپنے جذبات کا اظہار کرنا چاہتے ہیںجو آپ کی پارٹی اور اس کی بے شمار ذیلی تنظیموں نے ہماری سیاست ،ثقافت اور سماجی زندگی کو مکدر کردیا ہے۔ اسی سے کٹھوعہ اور اناﺅ جیسے واقعات سامنے آتے ہیں۔ ان دونوں ریاستوں میں آپ کی پارٹی ہی اقتدار میں ہے۔ امید ہے کہ آپ اس معاملے میں مثبت رویہ اختیار کریںگے ۔

About the author

Taasir Newspaper