اسلام

جانئے وہ کون کون سے ہیں گناہ، جن کی وجہ سے کوئی بھی دعا نہیں ہوتی قبول

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 05-june-2018

دعا اللہ کی عبادت ہے ، دعا مانگنے سے بے شمار ثواب ملتا ہے ، رب سے نہ مانگنا بے پرواہی کی نشانی ہے ، بندے کو چاہئے کی وہ اپنے اللہ سے ہر وقت دعا منگتا رہے  اس سے محبت الہی پیدا ہوتی ہے انسان اللہ کے قریب ہو جاتا ہے اور زیادہ دعا مانگنے کا جذبہ آتا ہے، اللہ پاک اپنے بندے کی ہر خواہش کو مکمل کرتا ہے اگر وہ اسے دل سے مانگے تو۔ اللہ اپنے بندہ کا ہر گناہ معاف کر دیتا ہے اگر وہ نیک نیت سے استغفار کرے تو۔ دعا رب کو عزیز ہے ۔ دعا سے آنے والی ہر مصیبت ٹل جاتی ہے اور بد نصیبوں کے نصیب کھل جاتے ہیں ۔ دعا وہ ہے جس سے قسمتیں بدل جاتی ہیں۔

اللہ تعالٰی نے حضرت آدم علیہ السلام سے فرمایا کہ ایک کام تمہارا ہے اور ایک کام ہمارا۔تمہارا کام دعا مانگنا ہے، ہمارا کام قبول کرنا 

بے شاک دعا مانگنے والا اللہ اور اس کے رسول بے حد قریب ہو اور اللہ کو دعا مانگنے والا اپنا بندہ بے پناہ پسند ہو لیکن یہ بھی واضح ہے کہ دعا مانگنے کی شرائط ہیں اور ان کے پورا نہ ہونے سے اللہ پاک دعا قبول نہیں کرتا ، کچھ ایسے گناہ ہیں جن سے انسان کی دعا کبھی قبول نہیں ہوتی ۔

گر کوئی شخص رشوت بھی کھاتا ہو، اور مال غبن و خیانت بھی اڑاتا ہو، شراب بھی پیتا ہو، اور غریبوں کا لہو بھی چوس کر جیتا ہو، اور ہر چیز حرام ہی اس کے یہاں عام ہو تو ایسے شخص کی پکار قبولیت کے درجے تک نہیں پہنچ سکتی۔

اور ایسا شخص جس کا ذرائع آمدنی مشکوک ہو ایسے انسان کا کھانا پینا اوڑھنا بچھونا سب حرام ہوتا ہے اور ایسے انسان کا جسم بھلے بطاہر بہت خوشبودار اور آراستہ پیراستہ ہو مگر اس کی روح بہت متعفن ہوتی ہے اور پاکیزگی کو پسند کرنے والا رب اس کی آواز کو نہیں سنتا ہے اسی سبب ایسے انسان کی دعا اللہ کبھی قبول نہیں کرتا ۔

About the author

Taasir Newspaper