جدیو ممبران اسمبلی کی میٹنگ کے بعد سب کی نگاہیں نتیش کمار پر

پٹنہ 16 جولائی (تاثیر بیورو): بہار میں عظیم اتحاد کے درمیان مچے گھماسان کے بیچ سی ایم نتیش کمار نے صدر جمہوریہ کے انتخاب کے حوالے سے جدیو کے ممبران اسمبلی کی میٹنگ بلائی۔ میٹنگ میں شامل ممبران اسمبلی نے تیجسوی یادو کے استعفیٰ کے مطالبے پر اپنے اتفاق کا اظہار کیا۔ میٹنگ کے بعد سب کی نگاہیں وزیراعلیٰ نتیش کمار پر ٹکی ہوئی ہیں۔ ایک انے مارگ واقع سی ایم رہائش گاہ پر ہوئی میٹنگ میں شامل جدیو ممبران اسمبلی کے تیور سخت نظر آئے۔ ایم ایل اے شیام بہادر سنگھ نے کہا کہ تیجسوی یادو کو استعفیٰ دے دینا چاہئے۔ اگر استعفیٰ کے بعد حکومت گرتی بھی ہے تو جدیو انتخاب میں جانے کیلئے تیارہے۔ ایم ایل اے کویتا سنگھ نے بھی یہی کہا کہ تیجسوی کو استعفیٰ دے دینا چاہئے۔ تادم تحریر میٹنگ ختم ہوچکی ہے۔ اس مسئلے پر کئی ممبران اسمبلی کھل کر نہیں بول پارہے ہیں۔ حالانکہ ان میں سے کچھ لوگ یہ مان رہے ہیں کہ نتیش کمار نے کبھی اپنے اصولوں سے سمجھوتہ نہیں کیا ہے۔ وہ جو بھی فیصلہ لیں گے سب لوگوں کیلئے قابل قبول ہوگا۔ میٹنگ کے اختتام کے بعد جدیو کے ریاستی صدر وششٹھ نارائن سنگھ نے کہا کہ صدر جمہوریہ کے انتخاب کے سلسلے میں سبھی لوگوں کو یہ سمجھایا گیا کہ آپ لوگ وقت پر آجائیے گا۔ ساتھ ہی انہیں ووٹنگ کا طریقہ بھی بتایا گیا۔ شیام رجک کا کہنا ہے کہ کل صدر جمہوریہ کے انتخاب میں رام ناتھ کووند کو ضرورت سے زیادہ ووٹ ملیں گے۔ ساتھ ہی جدیو کے کچھ رہنماؤں نے اشاراََ یہ بھی بتایا کہ کراس ووٹنگ ہونے کے امکانات زیادہ ہیں۔ اس سے قبل جدیو رہنما کے سی تیاگی نے کہا کہ یہ میٹنگ صدر جمہوریہ کے انتخاب کے مدنظر بلائی گئی ہے۔ میٹنگ کا اور کوئی دوسرا مقصد نہیں ہے۔ وہیں جدیو ترجمان اجئے آلوک نے کہا کہ کل سوموار کو صدر جمہوریہ کا انتخاب ہونا ہے۔ ممبران اسمبلی ووٹ دیں گے ، ہم صحیح وقت پر صحیح فیصلہ لیں گے۔ قابل ذکر ہے کہ 23جولائی کو جنتا دل یو کے مجلس عاملہ کی ہونے والی میٹنگ کی تاریخ کو بڑھا کر اب 19اگست کردیا گیا ہے۔