ہندوستان کو ڈے نائٹ ٹیسٹ کے لئے مجبور نہ کرے سی اے :رائے

ممبئی، 04 مئی (یو این آئی) ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کا آپریشن کر رہی منتظمین کی کمیٹی (سی او اے ) کے سربراہ ونود رائے نے صاف کیا ہے کہ ہندستانی ٹیم اس سال ہونے والے آسٹریلیا کے دورے میں دن رات ٹیسٹ نہیں کھیلے گی اور اس کے لیے اسے مجبور بھی نہ کیا جائے ۔ بی سی سی آئی نے اس سے پہلے بھی کہا تھا کہ وہ گلابی گیند کے معیار کو لے کر پر یقین نہیں ہے اور اس لئے فی الحال آسٹریلیا میں دن رات ٹیسٹ کھیلنے کے لیے تیار نہیں ہے ۔کرکٹ آسٹریلیا (سی اے ) ایڈیلیڈ میں سیریز کا پہلا ٹیسٹ گلابی گیند سے فلڈ لائٹ میں کھیلنا چاہتا تھا۔ س¸ اواے چیف رائے نے واضح کیا ہے کہ ہندستان آئندہ آسٹریلیا دورے میں گلابی گیند سے ٹیسٹ کھیلنے کو تیار نہیں ہے ۔انہوں نے ساتھ ہی کہا کہ ہندستانی بورڈ فی الحال دلیپ ٹراف¸ میں دن رات ٹیسٹ کا تجربہ کر رہا ہے ۔ رائے نے کہا کہ ہم آسٹریلیا کے ساتھ دن رات ٹیسٹ نہیں کھیلنا چاہتے ہیں۔ہم مسلسل یہ بات کہہ رہے ہیں کہ ہم اب گلابی گیند سے بین الاقوامی کرکٹ میں کوئی تجربہ نہیں کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہندستان کو دن رات میچ کے لیے پابند نہیں کیا جانا چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے سر پر کوئی بندوق رکھ کر دن رات کرکٹ نہیں کھیلا سکتا ہے ۔ہمیں کوکابورا اور گلابی گیند سے کھیلنے کو لے کر اپنے شکوک و شبہات ہیں۔ بی سی سی آئی نے بین الاقوامی سطح پر ہمیشہ ہی گلابی گیند سے کھیلنے پر اعتراض کیا ہے ۔ ہندستانی ٹیم 21 نومبر سے 19 جنوری تک آسٹریلیا کے دورے پر چار ٹیسٹ، تین ٹوئنٹی 20 اور تین ون ڈے میچوں کی سیریز کھیلے گا۔اگرچہ کرکٹ آسٹریلیا نے ہندستان کے ساتھ ایڈیلیڈ میچ کو گلابی گیند سے کھیلنے کے لیے اپیل کی تھی۔سی اے سربراہ جیمز سدرلینڈ نے کہا کہ سب کو معلوم ہے کہ آسٹریلیا نے گلابی گیند سے تمام ٹیسٹ میچ جیتے ہیں جو اس نے آسٹریلیا زمین پر کھیلے ہیں اور ہو سکتا ہے کہ حریف ٹیموں کو اس بات کا ڈر ہو۔ ہندستانی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ روی شاستری نے نائٹ ٹیسٹ میچ نہ کھیلنے پر کہا ہے کہ کھلاڑی فی الحال پنک بال سے فلڈ لائٹس میں ٹیسٹ میچ کھیلنے کیلئے تیار نہیں ہیں ۔بی سی سی آئی کی انتظامی کمیٹی کے ایک رکن نے بھی روی شاستری کی تائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے ہیڈ کوچ روی شاستری سے پنک بال ٹیسٹ پر بات کی تھی لیکن شاستری نے واضح کیا کہ ٹیم کے کھلاڑیوں سے اس موضوع پر بات کی تھی لیکن پنک بال کرکٹ کھیلنے کو وہ تیار نہیں ہیں ۔