بین الاقوامی

عراق میں ترکی طیاروں کا كردش دہشت گردوں کے ٹھکا نوں پر حملے

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 17-June-2018

انقرہ، : ترکی کے جنگی طیاروں نے عراق کے کاندل پہاڑوں میں دہشت گرد تنظیم کردستان ورکرز پارٹی (پي كےكے) کی ایک میٹنگ پر حملہ کیا جس میں ایک ٹاپ دہشت گرد کے ڈھیر ہونے کا دعوی کیا جا رہا ہے۔

ترکی کے صدر طیب رجب اردگان نے ہفتہ کو اس کا دعوی کیاہے۔ ترکی فوج نے شمالی عراق میں پي كےكے کو ہدف کر كاندل پر بم برسائے۔ ترکی نے امکان ظاہر کیا ہے کہ عراق-ایران سرحد کے قریب اس جگہ پر دہشت گرد گروپ کےٹاپ کمانڈروں کا ٹھکانا ہے۔
کنال 7 ٹیلی ویژن کے ساتھ انٹرویو میں مسٹر اردگان نے کہا کہ ترکی کے لڑاکا طیاروں نے كاندل پہاڑوں میں ایک میٹنگ کے مقام کو نشانہ بنایا جہاں پی کے کے،کے ٹاپ دہشت گرد موجود تھے. انہوں نے کہا فوج جلد ہی فضائی حملوں کے نتائج کا اعلان کرے گی۔

ترکی نے حال ہی میں كاندل پہاڑوں میں ممکنہ زمینی حملے کی تنبیہ کو بڑھا دیا ہے. مسٹر اردوگان نے کہا کہ انہوں نے اس معاملے پر ایرانی صدر حسن روحانی کے ساتھ بات چیت کی تھی اور دونوں نے علاقائی سلامتی کو برقرار رکھنے کے لئے اتفاق کیا تھا۔

شمالی عراق کا كاندل پہاڑ ایران اور عراق کے درمیان سرحد کے قریب واقع ہے. بغداد میں عراق کی حکومت پر ایران کا زبردست اثر ہے۔

About the author

Taasir Newspaper