ڈی یو کے وی سیی دفتر میں کجریوال اسٹائل میں دھرنا

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 17-June-2018

نئی دہلی، 16 جون : دہلی یونیورسٹی کی مجلس عاملہ کونسل کے تین ارکان سمیت چار افراد ڈرامائی انداز میں جمعہ کو دوپہر 12 بجے سے وائس چانسلر دفتر میں کجریوال اسٹائل میں اپنے مطالبات کو لے کر دھرنے پر بیٹھے ہیں لیکن وائس چانسلر پروفیسر یوگیش تیاگی نے ان سے بات چیت کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

یہ چاروں لوگ جب رات میں وائس چانسلر دفتر سے نہیں ہٹے تو مسٹر تیاگی خاموشی دوسرے دروازے سے بغیر بتائے باہر نکل گئے۔
مجلس عاملہ کے رکن سی راجیش جھا نے ’یو این آئی‘ کو بتایا کہ ہم لوگ جمعہ شام 12 بجے سے رات بھر وائس چانسلر دفتر میں دھرنے پر بیٹھے ہوئے ہیں اور ہمارا دھرنا جاری رہے گا۔انہوں نے بتایا کہ اگر مسٹر تیاگی ہم لوگوں کو آج یا کل ملنے کا وقت نہیں دیتے ہیں تو ہم پیر تک یہ دھرنا جاری رکھیں گے۔

مسٹر جھا کے ساتھ کونسل کے رکن اے کے بھاگی، راجیش گوگنا اور فنانس کمیٹی کے رکن راج پال سنگھ پوار اس دھرنے میں شامل ہیں۔اس دوران کل دیر رات یونیورسٹی کے اکیڈمی کونسل کے چھ رکن بھی مسٹر تیاگی سے ملنے کے لئے وائس چانسلر دفتر گئے لیکن انہیں دفتر میں نہیں جانے دیا گیا جس کی وجہ سے یہ چھ رکن بھی رات 10 بجے تک وائس چانسلر دفتر کے سامنے دھرنے پر بیٹھے رہے۔

قابل غور ہے کہ آج عیداور کل اتوار ہونے کی وجہ سے یونیورسٹی بند ہے۔ ایسے میں مسٹر تیاگی کے دفتر آنے کی امید کم ہی ہے۔