سیاست میں ہمیشہ اصولوں کے پکے رہے سومناتھ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 14-August-2018

کولکتہ،13اگست (یو این آئی) کمیونسٹ لیڈر مسٹر سومناتھ چٹرجی نے سیاست میں کبھی اپنے اصولوں سے سمجھوتہ نہیں کیا اور اور پارلیمانی جمہوریت کی مضبوطی ان کی اولین ترجیح رہی۔25جولائی 1929کو آسام کے تیز پور میں پیدا ہوئے مسٹر چٹرجی نے جیسس کالج سے گریجوئیٹ اور پوسٹ گریجوئیشن کی تعلیم حاصل کی۔ سیاست میں داخلہ سے پہلے وہ کلکتہ ہائی کورٹ میں ایک وکیل کے طورپر پریکٹس کرتے رہے۔ 1968میں وہ مارکسی کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم ) میں شامل ہوئے۔ انہوں نے پہلی بار آزاد امیدوار کے طورپر سی پی ایم کے تعاون سے لوک سبھا کا الیکشن لڑا اور منتخب ہوئے۔مسٹر چٹرجی نے 9مرتبہ الیکشن جیتا حالانکہ 1984میں جادھوپور پارلیمانی سیٹ سے محترمہ بنرجی کے ہاتھوں الیکشن ہارگئے۔ 1989سے 2004تک وہ لوک سبھا میں اپنی پارٹی کے لیڈر رہے۔ وہ بطور رکن پارلیمان دسویں بار 2004میں بولپور پارلیمانی سیٹ سے منتخب ہوئے۔چار جون 2004کو مسٹر چٹرجی اتفاق رائے سے 14ویں لوک سبھا کے اسپیکر منتخب ہوئے اور 2009تک اس عہدہ پر رہے۔ 2008میں اس وقت کی ترقی پسند اتحاد کی اتحادی حکومت نے جب امریکہ کے ساتھ نیوکلیائی معاہدہ کیا تو سی پی ایم نے حکومت سے حمایت واپس لے لی اور مسٹر چٹرجی سے لوک سبھا کے اسپیکر کاعہدہ چھوڑنے کے لئے کہا لیکن مسٹر چٹرجی نے یہ کہتے ہوئے عہدہ سے ہٹنے سے انکار کردیا کہ وہ لوک سبھا اسپیکرکے طورپر کسی پارٹی کے ساتھ نہیں ہیں۔