طالبان کو امن مذاکرات کے لئے روس کی دعوت منظور

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 23-August-2018

کابل : طالبان نے افغانستان کے بارے میں روس کے مجوزہ امن مذاکرات کی دعوت قبول کر تے ہوئے اپنے چار سینئر اراکین کو روس بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تاہم، افغان حکومت نےاس امن مذاکرات میں حصہ لینے سے انکار کر دیا۔

طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا کہ “ہمارے لیڈروں نے روس کی قیادت میں امن مذاکرات میں شامل ہونے کے لئے روس کی دعوت کو قبول کر لیا ہے”۔

روس نے امریکہ سمیت کئی ممالک کو آئندہ چار ستمبر کو ماسکو میں مجوزہ مذاکرات میں شامل ہونے کے لئے مدعو کیا ہے لیکن امریکہ اور افغانستان نے کہا کہ وہ مذاکرات میں شامل نہیں ہوں گے۔

ایک طالبانی کمانڈر نے کہا کہ قطر کے دارالحکومت دوحہ میں اسلامی گروپوں کے سیاسی دفتر کے سربراہ محمد عباس اسٹنکزئی کی قیادت میں طالبان کے کم از کم چار سینئر ارکان اس مذاکرات میں شامل ہوں گے۔
اس فیصلے کے چند گھنٹوں پہلے افغان حکومت نے کہا کہ وہ مذاکرات میں شامل نہیں ہو گی۔

افغانستان کی وزارت خارجہ کے ایک اہلکار نے بتایا کہ ” ہم لوگوں نے ماسكو کانفرنس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت طالبان کے ساتھ غیر ملکی طاقتوں کی براہ راست شمولیت کے بغیر ‘ براہ راست بات چیت’ کرے گی۔