مستقبل کی ضرورتوں پر انجینئر زور دیں: مودی

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 26-August-2018

نئی دہلی : وزیراعظم نریندر مودی نے آج آل انڈیا ریڈیوں پر نشر ہونے والے اپنے ماہانہ پروگرام من کی بات میں انجینئروں پر زور دیا کہ وہ مستقبل کی ضروریات کو ذہن میں رکھ کر عمارتوں کی تعمیر میں ایسی تکنیک استعمال کریں جو ماحول دوست اور قدرتی آفات کا سامنا کرنے کے لائق ہوں۔ اس کے علاوہ عمارتوں کی تعمیر میں مقامی اشیا کا استعمال ہو۔

مسٹر مودی نے اتوار کو من کی بات کے 47 ویں ایڈیشن میں کانپور کی انجینئرنگ کی طالبہ بھاونا ترپاٹھی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اب جب ہم 15 ستمبر کو انجینئرنگ کا دن منائیں تو ہمیں مستقبل کے لئے بھی سوچنا چاہیے۔ جگہ جگہ ورکشاپ کرنی چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ ان ورکشاپ میں بدلتے دور ہمیں کن چیزوں کے بارے میں سیکھنا ہے وہ سکھانا ہوگا؟ لوگوں کو جوڑنا ہوگا ، ان پر غور کیا جانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ آج کل ڈیزاسٹر مینجمنٹ (قدرتی آفات بندوبست) ایک بہت بڑا کام ہوگیا ہے۔پوری دنیا کو قدرتی آفات کا سامنا ہے۔ ایسے میں بنیادی انجینئر کی ہیئت ، نصاب ، عمارتوں کی تعمیر کی تکنیک ماحولیات دوست ہونی چاہیے۔

مسٹر مودی نے قدیم ہندوستان کے فن تعمیر کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ تقریباً بارہ سو سال قبل ایک بڑےپہاڑ کو، ایک بہترین وسیع و عریض مندر کی شکل دی گئی۔ وہ مہاراشٹر کے ایلورا میں واقع کیلاش مندر ہے۔

وزیراعظم انجینئرنگ کی مہارت کو نمایاں کرنے کے لئے تامل ناڈو کے تنجاوور کے بدیشورمندر اور گجرات کے پاٹن میں 11 ویں صدی کی رانی کی واو کا ذکر کیا۔

بھارت رتن ایم وش ویشوریہ کا ذکر کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ کاویری ندی پر ان کے بنائے ہوئے کرشن راج ساگر باندھ سے لاکھوں کسان اور عام آدمی مستفید ہوتے ہیں۔