کھیر سے متعلق میرے بیان کا غلط مطلب نکالا گیا : اپندر

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 28-August-2018

پٹنہ 27 اگست ( یو این آئی ) مرکزی وزیر اور راشٹریہ لوک سمتا پارٹی ( رالوسپا ) صدر اپندر کشواہا نے ان کے بیان پر شروع ہوئی سیاست پر آج کہاکہ کھیر لفظ کا غلط مطلب نکالا گیاکیونکہ انہوں نے کسی خاص پارٹی کانام تک نہیں لیا تھا۔ مسٹر کشواہا نے یہاں جے پرکاش نارائن بین الاقوامی ہوائی اڈہ پر نامہ نگاروں سے اپنے بیان پر وضاحت دیتے ہوئے کہاکہ میں یدو ونشیوں کا دودھ اور کش ونشیوں کا چاول ملنے سے مزیدار کھیر بننے کی بات اپنی پارٹی رالوسپا کو مضبوط کرنے اور اس کے عوامی حمایت کی توسیع کیلئے کہی تھی۔ ساتھ پنچ میوا لفظ کا استعمال سماج کے سبھی طبقات کے تعاون سے پارٹی کو مضبوطی عطا کرنے کیلئے کیا تھا۔رالوسپا صدر نے کہا اگر رالوسپا مضبوط ہوئی تو قومی جمہوری اتحاد ( این ڈی اے)مضبوط ہو گا۔ اور مسٹر نریندر مودی دوسری بار بھی وزیر اعظم بنیں گے۔ مجھے دکھ ہے کہ میرے ذریعہ کہے گئے کھیر لفظ کو کسی خاص پارٹی سے جوڑ دیا گیا۔مسٹر کشواہا نے کہاکہ انہوں نے اپنے بیان میں یہ نہیں کہاتھاکہ راشٹریہ جنتا دل ( آر جے ڈی ) کا دودھ اور بھارتیہ جنتا پارٹی ( بھاجپا) کی چینی ملے گی تو مزیدار کھیر بنے گی۔ میں نے پورے سماج سے حمایت مانگی ہے۔ میں نے سماجی اتحاد کی بات کہی اس لئے براہ کرم میرے بیان کو کسی ذات ، کمیونیٹی یا خاص پارٹی سے نہ جوڑا جائے۔واضح ہوکہ مسٹرکشواہا نے بہار کے سابق وزیر اعلیٰ بی۔ این منڈل کی سویں جینتی پر سنیچر کو راجدھانی پٹنہ میں منعقد ایک پروگرام میں کہا تھا یدو ونشیوں کا دودھ اور کشونشیوں کا چاول مل جائے تو کھیر بن سکتی ہے ، لیکن کھیر کے لئے پسماندہ ذات اور دبے۔ کچلے سماج کا پنچ میوا بھی چاہئے ۔ تب کھیر جیسا لذیذ پکوان بن سکتا ہے ۔ ان کے اس بیان کو سیاسی گلیاروں میں رالوسپا کے سال 2019 کا لوک سبھا انتخاب آر جے ڈی کے ساتھ لڑنے کے اشارہ کے طور پر دیکھا گیا۔ اس پر حزب مخالف کے لیڈر تیجسوی پرساد یادو نے اتوار کو ٹوئٹ کر کہا ، بے شک اپندر جی ، لذیذ اور مقوی کھیرکیلئے کام کرنے والوں کی ضرورت ہے۔ پنچ میوا کے صحت مند خصوصیات نہ صرف جسم بلکہ صحت مند سماج کی تعمیر میں بھی طاقت دیتے ہیں۔ پیار ومحبت سے بنائی گئی کھیر میں غذائیت ، لطف اور طاقت کی بھر پور مقدار ہوتی ہے۔ یہ ایک اچھا پکوان ہے۔