امبانی کی قرض میں ڈوبی کمپنی کو حکومت کے دباؤ کی وجہ سے ٹھیکہ ملا:کانگریس

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 01-September-2018

نئی دہلی، 31 اگست (یواین آئی) کانگریس نےالزام عائد کیا ہے کہ قرض میں ڈوبی صنعت کار انل امبانی کی کمپنی کو رافیل طیارے سے متعلق ٹھیکہ حکومت کے دباؤ کی وجہ سے ملا ہے۔کانگریس ترجمان ابھیشیک منو سنگھوی نے آج یہاں پارٹی کی پریس کانفرنس میں کہا کہ اگر حکومت کا دباؤ نہ ہوتا تو رافیل طیارے کا سودا طے ہونے سے محض 12 دن پہلے ہی امبانی کی غیرتجربہ کار کمپنی کو یہ ٹھیکہ نہ ملتا۔انہوں نے میڈیا رپورٹوں کا حوالہ دیا اور کہا کہ ان خبروں سے اس سودے کے دباؤ میں ہونے کی تصدیق ہوتی ہے۔ خبروں میں کہا گیا ہے کہ رافیل سودے پر دستخط ہونے سے دو دن پہلے انل امبانی کی کمپنی ریلائنس انٹرٹینمنٹ نے فرانس کے اس وقت کے صدرفرانسوا اولاند کی شراکت دار جولی گايٹ کی فلم بنانے والی کمپنی کے ساتھ معاہدہ کیا تھا۔ترجمان نے اس سلسلے میں وزیر اعظم نریندر مودی سے سوال کیا اور کہا کہ انہیں بتانا چاہئے کہ جس صنعت کار کی کمپنی کو ٹھیکہ دیا گیا وہ ان کے ساتھ فرانس کے دورے پر جاتے ہیں لیکن وزیر دفاع اس دوران ان کے ساتھ نہیں ہوتے ہیں۔ انہیں یہ بھی بتانا چاہئے کہ حکومت علاقے کی کمپنی ایچ اے ایل سے چھین کر اس ٹھیکہ کو ایک پرائیویٹ کمپنی کو کس بنیاد پر دیا گیا جبکہ کمپنی کا مالک پہلے ہی 45 ہزار کروڑ روپے کے قرض میں ڈوبا ہے۔