انڈونیشیا میں زلزلہ اور سونامی سے ہلاکتوں کی تعدادبڑھکر832ہوئی

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 30-September-2018

جکارتہ – (یواین آئی)انڈونیشیا کے سلاویسی جزیرے میں زلزلہ اور سونامی سے ہلاکتوں کی تعداد 832ہوگئی اور سیکڑوں لوگ شدید طورپر زخمی ہوگئے ہیں۔

سرکاری خبررساں ایجنسی انتارا نے اتوار کو یہ اطلاع دی۔زلزلے اور سونامی کے بعد بڑی تعدادمیں اسپتال آئے زخمیوں کے علاج کے لئے اسپتالوں کو بہت مشقت کرنی پڑرہی ہے۔راحت اور بچاؤکارکنان پریشان حال لوگوں کی مدد کررہے ہیں۔

انتارا نے قومی آفات ایجنسی کے سربراہ کے حوالے سے ہلاک شدگان کی تعداد اور بڑھنے کا خدشہ ظاہر کیا ہے کیونکہ جمعہ کو آئے 7.5کی شدت والے زلزلے اور تقریباً پانچ فٹ اونچی سونامی کی وجہ سے کٹ چکے دور دراز علاقوں سے رپورٹ آنی شروع ہوگئی ہیں۔ہلاک شدگان میں زیادہ تر تقریباً ساڑھےتین لاکھ کی آبادی والے ساحلی پالو شہر کے رہنے والے تھے۔

ایجنسی کے ایک ترجمان کے مطابق اس حادثے میں 200سے زیادہ لوگ بری طرح زخمی ہوئےہیں۔اسپتالوں میں بڑی تعدا میں زخمی بھرتی ہورہے ہیں جبکہ کئی لوگوں کا علاج کھلے آسمان کے نیچے کیا جارہا ہے۔زندہ بچے لوگ ہلاک شدگان کی لاشیں نکالنے میں لگے ہیں۔ایک شخص کو سمندر کے پاس ایک چھوٹے کی بچے کی ریت میں لپٹی لاش نکالتے دیکھا گیا۔

انڈونیشیا کے صدر جوکو وڈوڈو نے کہا کہ راحت اور بچاؤ کے کام میں مدد کےلئے فوج کو بھی لگایا گیا ہے۔انہوں نے لوگوں سے زلزلے اور سونامی متاثرین کےلئے دعاکرنے کی بھی اپیل کی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سلاویسی جزیرے پر زلزلے کے جھٹکے آنے کا سلسلہ ابھی بھی جاری ہے جس کی وجہ سے لوگوں میں دہشت ہے۔پالو میں ڈرے ہوئے لوگ باہر ہی رہ رہے ہیں۔متاثر لوگوں تک راحت پہنچانے کےلئے انڈونیشیا کی فوج کو اتارا گیا ہے۔

افسران کا کہنا ہے کہ ابھی بھی بہت سے لوگ لاپتہ ہیں جن میں سے کئی ملبے میں دبے ہوسکتے ہیں۔سلاویسی جزیرے کا اہم شہر پالو اور زلزلے کے مرکز کے نزدیک واقع ڈونگالا شہر سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔