ایران اور روس شام میںخونریزی کو ہوا دے رہے ہیں: ٹرمپ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 28-September-2018

واشنگٹن،( اے یوایس ) امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اراکین پر زور دیا ہے کہ وہ ایران کو جوہری ہتھیاروں کے حصول سے روکنے کیلئےامریکہ کے ساتھ مل کر کام کریں۔سلامتی کونسل کے جوہری ہتھیاروں کی تخفیف سے متعلق اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے امریکی صدر نے ایران پر دوبارہ پابندیاں لگانے کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے اس کی وجہ ایران کا ‘ تباہ کن رویہ’ قرار دیا۔صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران اور روس پر الزام لگایا کہ وہ شام میں ‘خونریزی کو ہوا’ دے رہے ہیں۔تاہم انھوں نے اِدلب میں باغی جنگجووں کے خلاف عسکری کارروائیاں ترک کرنے پر شام، ایران اور روس کا شکریہ بھی ادا کیا۔ سلامتی کونسل کی صدارت رواں سال امریکہ کے پاس ہونے کے باعث صدر ٹرمپ نے سلامتی کونسل کے اجلاس کی صدارت کی۔ صدر ٹرمپ کیلئے سلامتی کونسل کی صدارت کرنے کا یہ پہلا موقع تھا۔امریکہ اور ایران کے تعلقات گزشتہ کئی دہائیوں سے کشیدگی کا شکار ہیں اور صدر ڈونلڈ ٹرمپ مشکل ہی سے تہران پر تنقید کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے دیتے ہیں۔ امریکی صدر نے کہا کہ ‘میں سلامتی کونسل کے تمام اراکین سے کہتا ہوں کہ وہ امریکہ کے ساتھ مل کر اس بات کو یقینی بنائیں کہ ایران کبھی بھی جوہری بم بنانے میں کامیاب نہ ہوسکے۔’امریکہ نے ایران اور عالمی طاقتوں کے مابین 2015 میں طے پانے والے جوہری معاہدے سے علیحدگی کے بعد حال ہی میں ایران پر پابندیاں عائد کردی ہیں ۔ امر یکی فیصلے سے امریکہ اور اس کے یورپی اتحا دیوں کے درمیان تلخی مزید واضح ہوگئی۔ بدھ کو سلامتی کونسل کے اجلاس سے قبل اسرائیل کے وزیراعظم بن یامین نتن یاہو سے ملاقات کے دوران امریکی صدر نے کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ اسرائیل اور فلسطین کیلئے دو ریاستی حل ہی سب سے بہترین حل ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ ان کا ‘خواب’ ہے کہ اپنے عہدے کی معیاد پوری ہونے سے قبل وہ امن منصوبے سے سب کو آگاہ کر سکیں۔ٹرمپ انتظامیہ اس سے قبل کہہ چکی ہے کہ اگر فریقین کی رضامندی شامل ہوئی تو وہ دو ریاستی حل کی تائید کریں گے۔