ایس سی ایس ٹی ایکٹ میں تبدیلی کے لئےجگہ جگہ لوگوں نےکیا مظاہرہ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 07-September-2018

ناؤکوٹھی،بیگوسرائے(کونین علی)
ناؤکوٹھی ایس سی ایس ٹی ایکٹ میں بدلاؤ لانے اور میڈل کلاس کی مالی بنیادی پرریزرویشن دینے کولے کر بھارت بندکا بلاک حلقہ میں بہت بڑا اثر پڑا ہے۔ بند حمایتیوں نے بینک ، ڈاک گھر، بلاک، انچل ویگر دفاترسمیت سرکاری وغیر سرکاری تعلیمی ادارہ کو بند کرایا گیا۔ بند حمایتیوں نے گھوم گھوم کر تاجروں کے دوکان کو بند کرایا۔ پہسارا ، مہیشواڑہ ، نیا، ناؤکوٹھی ، چھتونا، چک مظفرمسہری وغیرہ جگہوں پر بانس بلا لگاکر اور ٹائر جلاکر سڑک جام کردیاگیا۔ اس سے مسافروں کو کافی فضیحت جھیلنی پڑی، بند کی وجہ سے اسکول کے ٹیچراسکول نہیں پہنچ سکے۔زیادہ تراسکول کو بھی احتیاط کے طور پر بند کرادیاگیا۔ اسکولی بچوں کو بھی گھر لوٹنے میں کافی مشقت کرنی پڑی، پولس وبلاک انتظامیہ دیکھتے رہے۔ بندی سے عام عوام کو بینک ڈاک گھر ودیگر دفاتر میں کام نہیں ہونے پر پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا، بی آر سی بھون میں منعقد بیت الخلاء تعمیر کو لے کر اسکول کے پرنسپل کے ساتھ بی ڈی او کی میٹنگ نہیں ہوپائی بند حمایتیوں نے بی آر سی بھون میں تالا جڑ دیا۔ بند کرانے والوں میں گورو کمار، راہل کمار، اجول کمار سمیت درجنوں کو موجود تھے۔
بلیابیگوسرائے(بی کے گلشن )
سورن سماج کے ذیعہ ریزرویشن کے خلاف میں بلائے گئے آج بھارت بندکا اثر دیکھا گیا ۔ بلیا اور ڈنڈاری حلقہ میں بھی اس کا اثر رہا۔ عام طور سے بند حمایتیوں کے ذریعہ ریل اور سڑک کو بھی متاثر کیاگیا۔ بند حمایتیوں کے ذریعہ صبح 8بجے کے بعد سدانند پور ڈھالہ کے پاس این ایچ 31 پر دھرنا دے کر آمدورفت کھگڑیا بیگوسرائے روڈ تھپ کردیا۔ لکھمیاں ریلوے اسٹیشن پر جن سیوا اکسپریس کو گھنٹوں روکے رکھا۔ وہیں دونولی پھلوریا ریلوے اسٹیشن پر بند حمایتیوں کے ذریعہ ریل ٹریک پر دھرنادیئے جانے کی وجہ سے ریل بحال پر اثر پڑا۔ برونی کٹیہار اپ لائن اور ڈاؤن لائن پر ریل بحال متاثرہوا ہے۔ جب کہ بندی کا بازاروں پر کوئی اثر نہیں پڑا ہے۔ اسکول ،سرکاری دفتر عام دنون کی طرح کھلاہوا تھا۔ بلیا ریلوے اسٹیشن کے اسٹیشن ماسٹر دنکر شرمانے بتایا کہ جنسیوا اکسپریس جو سہرسہ سے کر چل امرتسر تک جاتی ہے۔دنولی پھلوریا ، ریلوے اسٹیشن بند حمایتوں کےذریعہ ریل ٹریک پر دھرنا دیئے جانے کی وجہ سے لگ بھک ڈھائی گھنٹہ تک گاڑی کھڑی رہی۔
مدھوبنی(کریم اللہ)
مدھوبنی ضلع میں ایس سی ایس ٹی ایکٹ کے خلاف سبھاس جھا اور ووک چودھری کی صدارت میں ضلع کے ہزاروں لوگ اوبی سی درجہ کے ذریعہ بند کیاگیا، اس تحریک میں پورے ہندوستان کی طرح مدھوبنی ضلع میں بھی پوری طرح چکہ جام رہاہے۔ اس تحریک کے ذریعہ سے ہم لوگ ریاستی اور مرکزی حکومت کوآگاہ کرتے ہیں کہ اگر اس قانون کی اصلاح نہیں کی گئی تو آنے والے وقت میں زیادہ تیزتحریک ہوگی۔اس بندی کے تحت تمام جگہوں پر آمدورفت تھپ ہوگیا۔ تمام گاڑیاں بند تھی۔ یہاں تک کہ سائیکل بھی روڈ پر نظر نہیں آرہی تھی ، اس بندی سے سرکاری دفتر اور کورٹ ، بازار وغیرہ کا فی متاثرہوا ہے۔ آفسران پیدل ہی آفس آئے۔ ضلع جج بھی کورٹ میں پیدل ہی گئے۔ قیدی گاڑی بھی بندی تھی۔ ایک بھی قیدی کی کورٹ میں پیشی نہیں ہوسکی۔اس تحریک مہم میں روہت کمار ، چنٹوکمار،مکیش یادو، سروج یادو، وکرم سنگھ ، نول جھا اور دیگر لوگ موجودتھے۔
موتیہاری(محمداکرم)
ملک کے اعلی ذات طبقوں کاایس سی ایس ٹی قانون کے خلاف بھارت بندکااثرمشرقی چمپارن ضلع میں بھی دیکھنے کوملا۔ایس سی ایس ٹی کے غلط استعمال کولے کرسپریم کورٹ کے آئے فیصلے کوپلٹنے کے لئے مودی سرکارکے زریعے لائے گئے بل کے خلا ف لوگوں کاغصہ موتیہاری کی سڑکوں پردیکھنے کوملا۔اعلی ذات سیناکی آوازپربلائے گئے بھارت بندکوکامیاب بنانے کے لئے درجنوں تنظیموں کے ارکان سڑک پراترے۔یہاں صبح سے ہی اعلی ذات کے لوگوں نے چوک چوراہوں پراکٹھاہوکرآگ زنی کی جسے دیکھتے ہوئے ضلع انتظامیہ نے جگہ جگہ بھاری پولس فورس کی تعیناتی کردی تھی۔شہرکے مینابازار،چھتونی چوک پربندکی وجہ سے سڑک کے دونوں جانب گاڑیوں کی لمبی لائن لگ گئی۔اسٹیشن روڈ،اسپتال چوک،کورٹ چوک سمیت سبھی جگہوں پرلوگوں نے آگ زنی کی اورجم کرمرکزی حکومت کے خلاف آوازبلندکیا۔کچھ جگہوں پرپولس کی موجودگی میں اعلی ذات سے تعلق رکھنے والوں نے دکانوں کوزبردستی بندکرایا ۔ٹرین کوروک کراحتجاج کیاگیا۔جسکی وجہ سے اسکول گاڑی اورایمبولنس کوکافی پریشانی کاسامناکرناپڑا اورمسافروںکو پیدل چل کرسفرکرنی پڑی۔وہیں ضلع کے ڈھاکہ بلاک حلقہ کے پچپکڑی میں بھی بھارت بندکاملاجلااثرملا۔ رکسول،ترکولیا،مہسی، گھوڑاصحن،آداپور،پکڑی دیال، چکیاسمیت دیگرجگہوں پربھارت بندکااثررہا۔کسی بھی جگہ سے کسی طرح کی انہونی کی خبرموصول نہیں ہوئی ہے۔وہیں سگولی سے ملی اطلاع کے مطابق اعلی ذات کے لوگوں نے چھپواچوراہاسمیت بلاک آفس کے سامنے این ایچ ۲۸پرٹائرجلاکراحتجاج کیاجس سے چھوتی بڑی سبھی طرح کی گاڑیوں کی آمدورفت بندرہی۔اس موقع پرآشوک جھا،سنتوش مشرا،مہیش مشرا،تپپوجھا،ابھیجت تیواری، کانگریس بلاک صدراجئے جھا،اروندجھا،نشاط پانڈے سمیت کثیرتعدادمیں لوگ موجودتھے۔
بتیا،(انیس الوریٰ)
مغربی چمپارن ضلع دفتر سمیت پورے ضلع بھر میں ایس سی ایس ٹی ایکٹ کے خلاف اعلیٰ ذات نے کئی جگہ سڑک کو دس بجے سے چار بجے تک جام رکھا۔ جس سے مسافروں کو اچھی خاصی مصیبت جھیلنی پڑی جگہ جگہ جام کی وجہ سے لوگوں کو ایک جگہ سے دوسری جگہ جانےمیں پریشانیاں آئی۔ مظاہرین نے جگہ جگہ مودی کے پتلے پھونکے اور مودی اور بھاجپا کے خلاف نعرہ لگائے۔ ایس سی ایس ٹی ایکٹ کو واپس لینے کا مطالبہ کررہے تھے۔ بھاجپا کے ساتھ رہنے کی وجہ کئی جگہ پر بہار حکومت کے خلاف بھی نعرہ لگائےگئے۔ مظاہرین نے اپنے نعرہ میں کہا کہ ایس سی ایس ٹی ایکٹ واپس نہیں تو آئندہ انتخاب میں بھاجپا کو ووٹ نہیں، مودی سرکار ہوش میں آؤ وغیرہ نعرہ سے ماحول گونجتا رہا۔ انتظامیہ صبح سے ہی چست درست دیکھی گئی۔ ہر چوک چوراہے پر پولس فورس تعینات تھے۔ اعلیٰ افسروضلع انتظامیہ کی گاڑیاں پٹرولنگ کررہی تھی۔ حالانکہ اعلیٰ ذات کے مظاہرے میں لوگوں کی قیاس سے زیادہ بھیڑ دیکھنے کو ملی ۔ لیکن مظاہرہ پر امن ماحول میں ہوا۔ پورے ضلع میں کہیں سے کسی بجھی واردات کی اطلاع نہیں ہے۔
مظفرپور (اسلم رحمانی)
ایس سی اور ایس ٹی قانون کولیکر لائےگئے آرڈیننس کےخلاف مبینہ طور پر اعلی ذات کی طرف سے بھارت بندکااثر مظفرپور میں بھی دیکھنے کو ملا، بند حامیوں نے بی جے پی ایم ایل اےو شہری ترقی وزیر بہار سریش شرما کے شوروم پربھی پتھربازی کیا جس کی وجہ سے شوروم کاشیشہ فوٹ گیا،بند کےدرمیان مظاہرین ایس سی-ایس ٹی ایکٹ اور مودی مردا باد کانعرہ لگارہے تھے بند کااثر ضلعے کے دہقانی حلقہ شکرا آنچل،مشہری آنچل،کڑھنی آنچل،موتی پور آنچل کانٹی آنچل میں بھی دیکھنے کو ملا اسکول بھی بندر