بخشے نہیں جائیں گے ماحول خراب کرنے والے شرپسند عناصر

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 14-September-2018

دربھنگہ :(عبدالمتین قاسمی )تہواروں کے درمیان شرارت کرنے والے عناصر کسی صورت میں بخشے نہیں جائیں گے اور ضرورت پڑنے پر ملزمین کے خلاف سی آر پی سی کی دفعہ 107،110اور 116کے تحت کاروائی فوری طور پر کی جائے گی ۔ تہوار کے موقع پر فرقہ وارانہ ماحول گرم کرنے والے عناصر کی شناخت کرکے ان پر سی سی اے لازمی طور پر لگائیں اور پرانے فرقہ وارانہ معاملوںمیں اسپیڈی ٹرائل شروع کریں۔ مذکورہ ہدایات سینئر ایس پی منوج کمار نے کرائم میٹنگ کے دوران پولیس افسران کو دی ۔ سینئر ایس پی نے محرم کے مد نظر نظم و نسق کی تیاریوں کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ اکھاڑہ جلوس پر امن طور پر نکالنااکھاڑے اور کمیٹی کی ذمہ داری ہوگی۔ پولیس مددگار کی حیثیت سے ان کے ہمراہ چلے گی ۔ایس ایس پی نے امن کمیٹی کے رضا کاروں کو مضبوط بنانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ امن کمیٹی کے رضا کاروں کو شناختی کارڈ جاری کیا جائے ۔ ایس پی نے ضلع محرم کمیٹی سے اپیل کی کہ بغیر پولیس کی جانکاری کے کوئی پروگرام نہیں کریں ورنہ کسی بھی طرح کی دشواری پیش آنے پر کمیٹی کو قانونی کاروائی کا سامنا کرنا پڑے گا ۔پولیس کپتان نے تہوار کے نام پر دیر رات ٹریپل سواری کرکے ہڑ دنگ کرنے والوں پر متنبہ کرتے ہوئے کہاکہ یہ حرکت کسی بھی قیمت پر برداشت نہیں کی جائے گی اور دیر رات مٹر گشتی کرتا دیکھ پولیس گرفتار کرسکتی ہے ۔ تہوار کو دیکھتے ہوئے شر پسند عناصر کی نگرانی کیلئے بلیک کمانڈو زکے تھری کیو آر ٹی تشکیل دی گئی ہے اور اب ضلع میں بلیک کمانڈوز کی تعداد 33ہوگئی ہے ۔ ایس ایس پی نے تھانہ انچارج سے کہا کہ کام نہیں تو تنخواہ نہیں کے اصول پر جے ایس آئی ؍اے ایس آئی سے روٹن کام کروائیں اور تھانہ صدر پولیس افسر کاکام کاج دیکھنے کے بعد ہی تنخواہ کی ادائیگی کریں ۔ ایس ایس پی نے تمام تھانوں کو قانونی شکتی سینٹر بنانے کی ہدایت دی اوراچھے کام کرنے والے ایک درجن پولیس افسران کو انعام دینے کااعلان کیا ۔انعام پانے والو ںمیںٹاؤن تھانہ ، صدر تھانہ کے علاوہ بیرول ،بینی پور سب ڈویزن کے بیشتر تھانہ انچارج شامل ہیںجنہوں نے اس بار رپورٹنگ سے زیادہ مقدمات کا تصفیہ کیا ہے ۔ پچھلے دوماہ میں رپوٹنگ کے علاوہ تین سو زیادہ معاملوں کا تصفیہ کیا گیا ہے اور آئندہ ماہ ۳۰۰ مزید مقدمات کے تصفیہ کاہدف طے کیا گیا ہے ۔کرائم میٹنگ میں بتایا گیا کہ بہادر پور ، ٹاؤن ، لہریاسرائے ، یونیورسیٹی اور صدر تھانہ کے ایک ایک مقدمہ کا سوپر ویزن خود ایس ایس پی کریں گے جبکہ باقی تھانوں کے مقدمات کا جائزہ ڈی ایس پی کریں گے ۔