گجرات

برخاست آئی پی ایس افسر سنجیو بھٹ گرفتار

Profile photo of Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 05-September-2018

احمد آباد : گجرات میں پولیس کی کرائم ریسرچ برانچ (سی آئی ڈی-کرائم) نے برخاست آئی پی ایس افسر سنجیو بھٹ کو تقریبا دو دہائی پرانے ایک معاملہ میں آج گرفتار کر لیا۔

سی آئی ڈی-کرائم پولیس ڈائرکٹر جنرل آشیش بھاٹیہ نے ’یو این آئی‘ کو بتایا کہ مسٹر بھٹ کو ایک اور پولیس اہلکار کے ساتھ گرفتار کیا گیا ہے جبکہ پانچ دیگر سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ انہیں راجستھان کے ایک وکیل کے اغوا کے معاملہ میں گرفتار کیا گیا ۔

راجستھان کے پالی کے وکیل شمشیر سنگھ راج پروهت کو مئی 1996 میں گجرات کے بناسكانٹھا کی پولیس نے پالن پور کے ایک ہوٹل سے ایک کلو افیون کی برآمدگی کے معاملہ میں پکڑا تھا۔لیکن ہوٹل کے منیجر نے انہیں پہچانے سے انکار کر دیا جس کے بعد انہیں چھوڑ دیا گیا۔ مسٹر راج پروهت نے بعد میں راجستھان میں معاملہ دائرکرکے الزام لگایا کہ گجرات ہائی کورٹ کے اس وقت کے جج آر آر جین کے اشارے پر پولیس نے انہیں اغوا کیا تھا تاکہ جج کی بہن کی اس کی دکان کو خالی کرایا جا سکے جسے ان کے ایک رشتہ دار نے لے رکھا تھا۔ راجستھان کی عدالت نے اس معاملہ میں گجرات پولیس کی کارروائی کو غلط بتایا تھا۔

بعد میں رٹائر ہونے والے جج جین نے 1998 میں گجرات ہائی کورٹ میں ایک کیس دائر کرکے پورے معاملہ کی تفتیش کرنے کی کوشش کی۔ انہوں نے راجستھان کی عدالت اور پولیس پر وہاں کے اس وقت کے وزیر اعلی اور ایڈووکیٹ کونسل کے دباؤ میں کام کرنے کا الزام لگایا تھا۔

گجرات ہائی کورٹ کے جج آر بی پارڈيوالا نےگذشتہ جون میں اس معاملہ کی تیزی سے جانچ کرنے کا حکم سی آئی ڈی کرائم کو دیئے تھے. واضح رہے کہ اس وقت کے وزیر اعلی نریندر مودی پر گجرات فسادات میں پولیس کو فسادیوں کے تئیں نرم رویہ اپنانے کے حکم دینے کے الزام لگانے والے مسٹر سنجیو بھٹ کو پولیس نے آج ہی حراست میں لیا ہے۔ گزشتہ ماہ ان کے یہاں واقع رہائش کے غیر قانونی طور پر تعمیر شدہ حصے کو عدالت کے حکم پر گرایا گیا تھا۔

About the author

Profile photo of Taasir Newspaper

Taasir Newspaper

Skip to toolbar