بند کا دربھنگہ میں غیر معمولی اثر ،سڑک و ریل خدمات ٹھپ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 07-September-2018

دربھنگہ :(عبد المتین قاسمی )مرکزی حکومت کے ذریعہ مانسون اجلاس میں ایس سی ؍ ایس ٹی ایکٹ میں ترمیمی تجویزکی منظور ی کے خلاف دربھنگہ میںمختلف اعلی ذات کی تنظیموں کے بند کا مکمل اثر دیکھا گیا ۔ جگہ جگہ سڑکوں پر روکاوٹیں پیدا کئے جانے کے سبب چھوٹی بڑی گاڑیاں، رکشا اور آٹو رشکا نہیں چل سکیں۔ بس اور ٹرین سروس بھی متاثر رہی۔ بند حامیوں نے چٹی چوک گمتی پر بہار سمپرک کرانتی ایکسپریس کو گھنٹوں روک دیا اور سڑک و ریل لائن کو ٹھپ کردیا۔ ٹریک جام کردینے کی وجہ سے بیشتر ٹرینیں مختلف اسٹیشن پر رکی رہیں۔ سرکاری وغیر سرکاری دفاتر ،اسکول ، کالجوں ، یونیورسٹیاں تو کھلی لیکن وہاں ملازمین اور طلبہ کی حاضری نہ کے برابر رہی۔ عدالت میں بھی بند کی وجہ سے لوگ نہیں پہنچ پائے اور وہاں بھی سناٹا پسرا رہا ۔ بند کے مد نظر انتظامیہ اور پولیس پوری طرح الرٹ تھی اور حفاظت کے سخت بند و بست تھے۔ بند حامیوں نے لہریا سرائے ٹاور، لوہیا چوک، چٹی چوک، دربھنگہ ٹاور، پنڈا سرائے، بیتا، دنار چوک، مرزا پور ، آئیکر چوراہا ، بیلا لوہیا چوک ، دارو بھٹی چوک ، الل پٹی ، برہتا ، پنڈا سرائے ، بلبھدرپور ، لہریاسرائے ، ایکمی گھاٹ ، سید نگر سمیت شہر کے لے کر تمام دیہی علاقوں کے چوک چوراہوں کو بانس بلا اور رسیوں سے باند ھ کر جام کردیا اور جگہ جگہ ٹائر جلا کر احتجاج کیا ۔