ریاست

بھارت بند کا تلنگانہ اور آندھراپردیش میںبھی زبردست اثر

Profile photo of Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 11-September-2018

حیدرآباد (یواین آئی) پٹرولیم اشیا کی قیمتوں میں اضافہ کے خلاف کانگریس اور دیگر جماعتوں کے بند کا دونوں تلگو ریاستوں تلنگانہ اور آندھراپردیش میں اثردیکھاگیا۔بند کے سبب عام زندگی مفلوج ہوگئی ۔کانگریس او ربائیں بازو کی جماعتوں کے کارکنوں نے کئی مقامات پر احتجاج کیا اور نعرے بازی بھی کی گئی۔صبح ہی سے احتجاج شروع کردیا گیا جس کے سبب کئی مقامات پر صورتحال کشیدہ ہوگئی ۔پولیس نے کئی مقامات پر احتجاجیو ں کو حراست میں لے لیا۔بند کی وجہ سے کئی تعلیمی ادارے بند رہے۔ دونوں ریاستوں کے اضلاع میں کئی مقامات پر بس خدمات متاثر رہیں ۔احتجاجی لیڈروں اور کارکنوں نے بس اسٹینڈس پہنچ کربسوں کو باہر آنے سے روک دیا ۔ پولیس نے بعد ازاں احتجاجیوں کو حراست میں لے لیا ۔تلنگانہ کے ضلع ورنگل میں بند کے موقع پر احتجاج کرنے والے کانگریس کے سینئر لیڈر پنالہ لکشمیا کو پولیس نے حراست میں لے لیا۔ ضلع محبوب نگر میں بھی بڑے پیمانہ پر احتجاج کیا گیا۔اس موقع پر اے آئی سی سی لیڈر سلیم احمد نے پارٹی کارکنوں اور لیڈروں کے ساتھ مل کر سڑ ک پر دھرنا دیا ۔انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس کا یہ خیال تھا کہ پٹرول کی قیمتوں میں کمی آئے گی تاہم ڈالر کی قیمت میں کمی کے باوجود پٹرولیم اشیا کی قیمتوں پر کوئی کنٹرول نہیں کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ نریندر مودی نے کہا تھا کہ نیا بھارت بنائیں گے ۔کیا یہی وہ نیابھارت ہے؟ملک میں مہنگائی سے لوگ پریشان ہیں۔قیمتوں پر قابو پانے کیلئے مرکز کو کافی وقت دیاگیا لیکن اس میں حکومت یکسر ناکام ہوگئی ہے۔مودی حکومت کو بے نقاب کرنے کیلئے یہ بند منایاجارہا ہے۔ ضلع یادادری بھونگیر میں بھی کانگریس کے کارکنوں نے احتجاج کیااور دھرنابھی دیتے ہوئے مرکزی حکومت کے اقدام کے خلاف نعرے بازی کی۔

About the author

Profile photo of Taasir Newspaper

Taasir Newspaper

Skip to toolbar