خون عطیہ کرنا صدقہ جاریہ ہے: عبدالقیوم انصاری

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 04-September-2018

کولکاتا (محمد نعیم) نیشنل ویلفیئر سوسائٹی کلب کے زیرِ اہتمام خون عطیہ کیمپ کا انعقاد ٹکیہ پاڑہ کے ملی پروگریسو ہائی اسکول میں کیا گیا ِ جہاں پوپلس بلڈ بنک کو ملت کے پچاس سے زائد نوجوانوں نے اپنا خون عطیہ دیا ِ اس موقع پر شریک مغربی بنگال مومن انصار سبھا کے صدر عبدالقیوم انصاری نے اخباری نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ضرورت مند مریضوں کو خون عطیہ کرنا صدقہ جاریہ میں شمار ہوتا ہے اور بغیر کسی امتیاز و ذاتی مفادات کے اپنا خون دوسروں کی زندگیاں بچانے کے لئے عطیہ کرنی چاہئے ِ ڈاکٹر مشتاق احمد نے خون عطیہ کے فوائد بیان کرتے ہوئے کہا کہ اکثر لوگوں کا خیال ہے کہ خون عطیہ کرنے سے انسانی صحت پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں جبکہ یہ بات قطئی درست نہیں ہے بلکہ نئے خون کے خلیات پرانے خون سے زیادہ صحت مند ہوتے ہیں جو انسان کو کئی امراض سے محفوظ رکھتے ہیں اور جسم سے نکلا ہوا خون ٢١ دن میں دوبارہ بن جاتا ہے ِ دیگر مقررین میں معروف سماجی خدمت گار اور سمریٹن ہیلپ مشن کے سربراہ مامون اختر ، مقامی کونسلر عصمت آرا ، شہزادہ سلیم ، شکیل احمد اور رئیس عالم شریک تھے۔ ِ پروگرام کو کامیابی سے ہمکنار کرنے والوں میں ادارہ کے اراکین جمیل اختر ، محمد ایوب انصاری ، تاجدالدین (راجو) فیاض احمد فروز احمد اور شہزادہ نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ۔