دانتوں کے جدیدعلاج کے بعد منھ کے کینسر سے متاثر مریض بھی عام زندگی بسر کرسکتے ہیں:ڈاکٹر پنکج کھراڈے

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 13-September-2018

علی گڑھ، (پریس ریلیز ) علی گڑھ مسلم یونیورسٹی(اے ایم یو)کے ڈاکٹر زیڈ اے ڈینٹل کالج کے پروستھو ڈونٹکس اینڈ ڈینٹل میٹیریل شعبہ کے اسسٹنٹ پرو فیسر ڈاکٹر پنکج کھراڈے کا کہنا ہے کہ دانتوں کے جدیدعلاج کے بعد اب منھ کے کینسر سے متاثر مریض بھی عام زندگی بسر کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار لکھنؤ کی کنگ جارج میڈیکل یونیورسٹی میں میگزلو فیشیل پروستھو ڈونٹکس پر منعقدہ قومی ورکشا پ میں مہمان مقرر کی حیثیت سے اپنے خطاب میں کیا۔ ڈاکٹر کھراڈے نے کہا کہ تبدیل ہوتی طرزِ حیات، تمباکو نوشی کی بڑھتی عادت، شراب نوشی اور منھ کی بہتر طور پر صفائی نہ رکھ پانے کے سبب ملک میں کینسر کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب ایک بہتر پہلو یہ بھی ہے کہ دانتوں کے علاج میں جدید طریقوں نے ان کے علاج کو آسان بنادیا ہے۔ ڈاکٹر پنکج کھراڈے نے ورکشاپ کے دوران تقریباً دو سو معالجین کو منھ کے کینسر کے مریضوں کے علاج کی تر بیت بھی دی۔ ڈاکٹر پنکج کھراڈے کو ٹاٹا کینسر ہاسپیٹل ممبئی اور اوکو یاما یونیورسٹی جاپان کی فیلو شپ سے بھی سرفراز کیا چکا ہے۔