ڈھاکہ میں تعزیہ جلوس پر سنگ باری ،تشدد اور آتش زنی،حالات کشیدہ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 24-September-2018

موتیہاری(محمداکرم): ڈھاکہ میں تعزیہ جلوس پراکثریتی فرقہ کے لوگوں نے پتھربازی کردی جس سے جلو س میں شامل لوگ مشتعل ہوگئے اورپولس کے سامنے ہی انصاف کی مانگ سمیت قصوروارں کی نشاندہی کرسزادینے کی مانگ کرنے لگے،حالات بے قابودیکھ کرپولس نے مسلم نوجوانوں پرجم کرلاٹھی برسائی اورہوامیں دورائوندگولی چلائی جس سے نوجوان اورزیادہ مشتعل ہوگئے اورپولس انتظامیہ کے خلاف نعرہ بازی کرنے لگے۔خبرکے مطابق شام قریب ساڑھے چاربجے نوجوان وبچے تعزیہ کے ساتھ سڑک پر کھیل کامظاہرہ کررہے تھے کہ اسی درمیان اکثریتی فرقہ کے لوگوں نے گھروں سے پتھربازی شروع کردی جس میں درجنوں نوجوانوں سمیت پولس اہلکارکوبھی چوٹیں آئیں۔اس درمیان ایک مسلم نوجوان کواکثریتی طبقہ کے لوگوں نے جم کرپیٹائی کردی اورپولس تماشائی بنی رہی جس سے ناراض سیکڑوں لوگوں نے سڑک پرآمدرفت بندکرہنگامہ کیااورپولس کے خلاف جم کرنعرہ بازی کی۔پولس کی یکطرفہ کاروائی سے اقلیتوں میں نارض پیداہوگئی اورانکایہی کہناہے کہ تھانہ صدرنے اک منظم سازش کے تحت اکثریتی طبقہ کے لوگوں پرکاروائی نہیں کررہی ہے۔قریب ساڑھے پانچ بجے سرکردہ لوگوں کے سمجھانے بجھانے سے مسلم نوجوانوں کربلامیدان کی طرف جارہے تھے کہ اسی درمیان اکثریتی طبقہ کے نوجوانوں نے بسرہیاچوک کے پاس سڑک جام کرپولس اورمسلمانوں نے خلاف ہنگامہ آرائی کرنے لگے اس درمیان نمائندہ کوپولس کی موجودگی میں فوٹوؒلینے سے روکاگیا۔موقع پرپہنچے ڈی ایم رمن کماروایس پی اوپیندرکمارشرمانے حالات کاجائزہ لیااورضروری ہداتات جاری کئے تب جاکرحالات پرامن ہوامگرکشیدگی برقرارہے۔پوراڈھاکہ شہرپولس چھائونی میں تبدیل ہے ۔وہیں ڈھاکہ حلقہ کے رکسارحیم پورکے وارڈنمبرگیارہ میں دن کے قریب دوبجے عبدالستارنامی مسلم شخص کے کھپرپوس گھرکواکثریتی طبقہ کے لوگوں نے آگ کے حوالے کردیاجہاں لوگوں نے پہنونچ کرآگ پرقابوپایااس آگ زنی میں قریب پچاس ہزارکی مالیت کانقصان ہواہے خبرلکھے جانے تک ایف آئی آر نہیں ہوپائی ہے۔ موقع پرپہنچ کرپولس نے حالات کوقابومیں کیاورنہ معاملہ بڑارخ اختیارکرسکتاتھا۔وہیں دوسری طرف شکارگنج تھانہ حلقہ کے گوہڑواچوک کے نزدیک بڑہرواگائوں کے لوگ جب تعزیہ جلو س لے کرآرہے تھے کہ ایک منظم سازش کے تحت لوگوں نے گھروں سے پولس کی موجودگی میں پتھربازی شروع کردی جس میں وسیم،جباز،علاء الدین،اشرف سمیت ایک درجن لوگ زخمی ہوگئے۔ایک شخص نے نام نہ ظاہرکرنے کی بنیادپربتایاکہ ہم لوگوں نے اس بابت سکرہناڈی ایس پی ومقامی تھانہ کوپہلے ہی بتادیاتھاکہ محرم کے روزاکثریتی طبقہ کے لوگ ہنگامہ کرکے ماحول خراب کرنے کی کوشش کرینگے اگراس وقت انتظامیہ نے ہماری بات مان لی ہوتی توآج کچھ نہیں ہوتا۔موقع پربھاری تعدادمیں پولس تعینات کردی گئی ہے۔