کھیل

کئی بار قسمت سے ملتے ہیں وکٹ: سمیع

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-September-2018

لندن، (یو این آئی) ہندوستانی فاسٹ بولر محمد سمیع نے کہا ہے کہ انگلینڈ کے بلے بازوں کو پریشان کرنے کے باوجود وکٹ نہیں نکال پانا کافی مایوس کن رہا لیکن کئی بار وکٹ بھی قسمت سے ملتے ہیں۔ انگلینڈ نے دوسری اننگز میں آٹھ وکٹ پر 423 رن بنانے کے بعد اننگز ڈکلئیر کردی تھی اور بھارت کے سامنے جیت کے لیے 464 کا بڑا ہدف رکھتے ہوئے میچ میں اپنی گرفت مضبوط کر لی ہے۔میچ میں جہاں بھارتی بلے بازوں نے مایوس کیا وہیں بولر بھی خاص کمال نہیں کر سکے ہیں اور سمیع نے پہلی اننگز میں 72 رنز پر کوئی وکٹ نہیں لیا جبکہ انگلینڈ کی دوسری اننگز میں 110 رنز دے کر وہ دو ہی وکٹ لے سکے۔ اوول میدان پر کھیلے جا رہے پانچویں اور آخری ٹیسٹ کے چوتھے دن کے کھیل کے اختتام کے بعد سمیع نے کہا کہ گیند بازوں نے کافی جارحیت کے ساتھ بولنگ کی تھی لیکن انہیں وکٹ نہیں مل سکے۔تیز گیند بازوں میں سمیع کے ساتھ ایشانت شرما نے بولنگ اٹیک کا ذمہ سنبھالا جبکہ تیز بولنگ آل راؤنڈر ہردک پانڈیا کو اس میچ میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔ ایسے میں سمیع کو مزید اوور میچ میں بولنگ کرنی پڑی۔انہوں نے انگلینڈ کی دوسری اننگز میں 25 اوور تک گیند بازی کی۔سمیع نے کہاکہ یہ کئی بار قسمت پر منحصر ہے۔ایک بولر کے طور پر آپ کو ہمیشہ صحیح سمت میں بولنگ کرنا چاہتے ہو، خاص طور پر نئی گیند کے ساتھ۔لیکن وکٹ ملنا قسمت پر بھی منحصر ہے، اگرچہ وکٹ نہیں نکال پانا بہت پریشان کرتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہماری گیندوں نے کئی بار انگلش بلے بازوں کو پریشان کیا لیکن وکٹ نہیں ملے اور ہمیں اس بات كو تسلیم کرنا ہوگا۔کئی بار جب آپ کے پاس ایک بولر کم هےہوتا ہے تو اس طرح کے حالات میں یہ مشکل بھرا ہوتا ہے کیونکہ یہ پچ تیز گیندبازوں کے لیے مددگار ہے۔فاسٹ بولر نے کہاکہ ایک فاسٹ بولر کی کمی سے موجودہ بولر پر بوجھ بھی بڑھ جاتا ہے اور اس سے زیادہ اوور کھیلنا پڑتا ہے۔یہ كوئي سنگین بات نہیں ہے، ایسا کئی بار ہوتا ہے اور کئی بار ہم فیلڈ چھوڑ کر چلے جاتے هیں کیونکہ اس سے چوٹ کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper