ریاست

گجرات ہائی کورٹ نے برخاست آئی پی ایس سنجیو بھٹ کوپولس تحویل میں بھیجا

Profile photo of Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-September-2018

احمد آباد، (یو این آئی) گجرات ہائی کورٹ نے تقریبا دو دہائی پہلے مبینہ طور پر ہوٹل میں افیون رکھوا کر راجستھان کے ایک وکیل کو اس معاملے میں پھنسانے اور اغوا کرنے سے متعلق معاملے میں گرفتار گجرات کیڈر کے برخاست آئی پی ایس افسر سنجیو بھٹ اور ایک دیگر سابق پولس افسر کو مزید پوچھ گچھ کے لئے آج 10 دنوں تک تفتیش کار ایجنسی سی آئی ڈی-کرائم کی خصوصی تفتیشی ٹیم کی تحویل(ریمانڈ) میں سونپنے کی منظوری دے دی۔ ضلع بناسکانٹھا کے اس وقت کے ایس پی رہنے والے مسٹر سنجیو بھٹ اور ان کے ماتحت مقامی کرائم برانچ کے انسپکٹر (اب ریٹائرڈ) اندرودن ویاس کو اس معاملے میں گزشتہ پانچ ستمبر کو گرفتار کیا گیا تھا۔ دونوں کو چھ ستمبر کو بناسکانٹھا کے ضلع ہیڈکوارٹر پالنپور کی عدالت میں پیش کیا گیا تھا ، مگر عدالت نے مدعا علیہان کی یہ دلیل قبول کرتے ہوئے کہ یہ معاملہ دو دہائی سے زیادہ پرانا ہے، اور اس سے متعلق کیس سپریم کورٹ میں زیر التوا ہے، انہیں ریمانڈ پر دینے کی عرضی مسترد کردی تھی۔ سی آئی ڈی نے اس کے بعد کل ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ ہائی کورٹ کے جسٹس آر پی دھولريا کی ایک رکنی بنچ نے آج 10 دن کے ریمانڈ کی منظوری دے دی۔ جبکہ سی آئی ڈی نے 14 دنوں کی ریمانڈ کی مانگ کی تھی۔ عدالت نے استغاثہ کی یہ دلیل قبول کر لی کہ مسٹر سنجیو بھٹ اور مسٹر ویاس کی گرفتاری ہائی کورٹ کی ہدایت پر اس معاملے کی جانچ کے لئے قائم ایس آئی ٹی نے کی ہے اور اس کی مزید انکوائری کے لئے انہیں حراست میں لے کر پوچھ گچھ ہونا ضروری ہے۔

About the author

Profile photo of Taasir Newspaper

Taasir Newspaper

Skip to toolbar