2019کے بعد 50 برس بی جے پی اقتدار میں رہے گی: شاہ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 10-September-2018

نئی دہلی، (یو این آئی) بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے صدر امت شاہ نے آج دعوی کیا کہ 2019 کے عام انتخابات جیتنے کے بعد پارٹی کو کم از کم پچاس برس تک اقتدار سے کوئی ہٹا نہیں سکے گا اور وہ ایسا فخر میں نہیں بلکہ اپنے کام کاج کی بنیاد پر کہہ رہے ہیں۔مسٹر شاہ نے آج یہاں پارٹی کی قومی عاملہ میٹنگ کے اختتامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ 2019کے عام انتخابات سے پہلے پارٹی کے 9کروڑ کارکن 22کروڑ کنبوں سے رابطہ کریں گے اور انہیں حکومت کی پالیسیوں اور پروگرام سے واقف کرائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ 2014کے انتخابات کے بعد سے وزیراعظم نریندر مودی نے آرام نہیں کیا ہے۔ انہوں نے 300لوک سبھا حلقوں کا دورہ کیا اور الیکشن سے پہلے باقی 240حلقوں کا بھی دورہ کرلیں گے۔ انہو ں نے کہاکہ 2001 کے انتخابات میں وہ گجرات میں جیتے تھے اور اس کے بعد سے وہ مسلسل جیت رہے ہیں۔بی جے پی کے صدر نے کہاکہ 2019 کے عام انتخابات جیتنے کے بعد پارٹی کو ائندہ پچاس برس تک اقتدار سے کوئی ہٹانے والا نہیں ہے۔ انہو ں نے کہاکہ ایسا ہم فخر میں نہیں بلکہ کام کی بنیاد پر کہہ رہے ہیں۔ ملک کی سیاست تبدیل ہورہی ہے اور اب نتائج اور کارکردگی کا اہم کردار ہوگیا ہے۔ ہم اسی یقین کی بنیاد پر چلیں گے۔بی جے پی قومی عاملہ کی میٹنگ کی ایک خاصیت یہ رہی کہ اس میں سیاسی قرارداد منظور کی گئی لیکن اقتصادی یا خارجی امور پر کوئی قرارداد نہیں آئی۔ البتہ زراعت کو پر ایک قرارداد منظور کی گئی۔ آسام میں قومی شہری رجسٹر پر ایک قرارداد منظور کی گئی ۔ مسٹر واجپئی کے انتقال پر ایک تعزیتی قرارداد پاس کی گئی۔قومی عاملہ کی میٹنگ میں کچھ ریاست میں درج فہرست ذات و قبائل روک تھام قانون پر اعلی ذات کی تحریک پر بحث کی اجازت نہیں دی گئی اور نامہ نگاروں کے سوالات کو بھی ٹالا گیا۔ اسی طرح سے پیر کو پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر اپوزیشن کے بھارت بند پر بھی کوئی بات نہیں ہوئی۔میٹنگ میں طے کیا گیا کہ 150ویں گاندھی جینتی کے موقع پر مختلف مقامات پر بی جے پی کے 150-150کارکنوں کی ٹولیاں بنائی جائیں گی اور یہ دس دس کلومیٹر پیدل چکر لوگوں کو بتائیں گے کہ سوچھ بھارت کے گاندھی کے خواب کو کس حد تک شرمندہ تعبیر کیا گیا ہے۔