سیاست سیاست

خاطر خواہ سیٹیں نہیں ملیں تو اپنے بل پر لڑیںگے انتخابات: مایاوتی

Profile photo of Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 10-October-2018

لکھنؤ (یواین آئی) بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) صدر مایاوتی نے ایک پھر دوہرایا ہے کہ بی ایس پی کوقابل قدر سیٹیں نہ ملنے پر کسی کے ساتھ اتحاد نہیں کرے گی اور اپنے بل بوتے پر الیکشن لڑے گی۔بی ایس پی کے بانی کانشی رام کی برسی پر منگل کو جاری بیان میں محترمہ مایاوتی نے کہا کہ انتخابی گٹھ بندھن کیلئے بھی پارٹی نےقابل احترام نشستیں ملنے کی شرط رکھی۔ انہوں نے کہا کہ گٹھ بندھن میں بی ایس پی نشستوں کے لئے کسی سے بھیک نہیں مانگےگي. قابل احترام سیٹیں نہ ملنے پر پارٹی تنہا اپنے بل بوتے پر ہی انتخابات لڑے گی ۔محترمہ مایاوتی نے بی ایس پی کے بانی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی آنجہانی کانشی رام کے ‘ سروجن ہتائے ، سروجن سکھائے کے فلسفہ کے ساتھ ملک کی ترقی کی راہ پر آگے بڑھانے کا کام کریں گی۔ بی ایس پی صدر نے کارکنوں سے راجستھان، مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ اور جنوبی ہند کی ریاست تلنگانہ میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کی تیاریوں میں متحد ہونے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ بی ایس پی دلتوں، قبائلیوں، پچھڑوں، مسلم اور دیگر مذہبی اقلیتوں کے ساتھ ساتھ اعلی ذات کے غریبوں کے عزت و وقار کے ساتھ کبھی سمجھوتہ نہیں کر سکتی، چاہے اس کے لیے کانگریس اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) حکومتوں کی کتنی ہی نفرت اور تشدد ہی کیوں نہ جھیلنا پڑے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور کانگریس پارٹی سے ان طبقات کے بڑے مفادات اور عزت واحترام کی توقع بھی نہیں کرتے، لیکن ان کی توہین بھی ہم برداشت نہیں کر سکتے۔ اسی لیے انتخابی گٹھ بندھن کیلئے ہماری پارٹی نے ‘ قابل قدر نشستیں ملنے کی شرط رکھی ہے۔انہوں نے کہا کہ دونوں پارٹیاں سماج کے غریبوں کے خیر خواہ نہیں ہیں. آزادی کے 70 برسوں کے بعد بھی غریبوں کی حالت ابتر ہے. اقتدار میں ان کی مناسب شراکت آج تک نہیں دی جاسکی ہے۔محترمہ مایاوتی نے الزام لگایا کہ کانگریس اور بی جے پی، بی ایس پی کو کمزور، بدنام اور سیاسی طور پر کمزور کرنے کے لئے صرف کوشش ہی نہیں بلکہ سام، دام، دنڈ،بھید وغیرہ جیسےہتھکنڈوں کا مسلسل استعمال کرتی رہتی ہے۔ انتخابات کے وقت دونوں پارٹیاں بی ایس پی کے خلاف سازشیں کر رہی ہیں۔ دونوں پارٹیوں سے زیادہ محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ بابا صاحب ڈاکٹر امبیڈکر کے زیر التوا کاموں کو پارٹی نے آگے بڑھانے کا کام کیا ہے۔ اس میں بڑی حد تک کامیابیاں بھی حاصل کی ہیں۔ اسی کا یہ نتیجہ ہے کہ صدیوں سے ظلم و ستم اور استحصال کے شکار اور نظراندازکئے گئے سماج کا ہر رکن اپنی خود داری اور عزت واحترام کے لئے اپنی اپنی سطح پر سخت جدوجہد کر رہا ہے۔سرکاری ظلم وزیادتی اور دہشت گردی برداشت کرنےکے باوجود اقتدار کی ماسٹر چابی حاصل کرنے کے لئے تن، من، دھن سے لگا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر کانشی رام کی جدوجہد، قربانی اور قربانیوں کی ہی بدولت یہ سماج نہ فروخت ہونے والا سماج بنا ہے، جو بابا صاحب کے حامیوں کی اصلی شناخت بھی ہے۔

About the author

Profile photo of Taasir Newspaper

Taasir Newspaper

Skip to toolbar