سیاست سیاست

رافیل ڈیل کو صحیح ٹھہرانے کی کوشش ہورہی :راہل

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 11-October-2018

نئی دہلی، (یو این آئی) کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے سپریم کورٹ کے ذریعہ رافیل طیارہ سودے کی خریداری کے عمل کی معلومات مانگے جانے پر وزیراعظم نریندر مودی پر ایک بار پھر طنز کرتے ہوئے کہاکہ اس کا فیصلہ وزیراعظم نے ہی کیا ہے۔مسٹر گاندھی نے بدھ کو اس پر ٹوئٹ کیا کہ سپریم کورٹ نے رافیل سودے کے عمل کی معلومات دینے کے لئے کہا ہے ۔ جواب بہت آسان ہے۔ وزیراعظم نے یہ فیصلہ کیا۔ ان کے فیصلے کو صحیح ٹھہرانے والا عمل چل رہا ہے۔ اس عمل کی شروعات ہوچکی ہے۔ اس سلسلہ میں وزیر دفاع آج رات فرانس جارہی ہیں۔اس کے ساتھ ہی مسٹر گاندھی نے سپریم کورٹ کے فیصلے سے متعلق خبر بھی پوسٹ کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ عدالت نے بدھ کو مرکز سے رافیل جنگی طیارہ سودے کو حتمی شکل دینے سے متعلق عمل کی پوری معلومات دستیاب کرانے کے لئے کہا ہے۔اس سے پہلے کانگریس کے ترجمان ایس جے پال ریڈی نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں منعقدہ پریس کانفرنس میں کہاکہ رافیل سودے پر وزارت دفاع کے جوائنٹ سکریٹری راجیو ورما نے اعتراض کیا تھا لیکن مودی حکومت نے ان کے اعتراض کو نظرانداز کیا اور ان سے جونےئر افسر سے رافیل سودے کو حتمی شکل دینے کے لئے کہا۔انہوں نے کہاکہ جس خاتون افسر اسمیتا ناگراج نے سینئر افسر کے اعتراض کو نظرانداز کیا تھا اس کے لئے اسے عہدہ میں ترقی دیکر پبلک سروس کمیشن کا رکن بنایا گیا ہے۔ اس طرح سے محترمہ ناگراج کی مدت کار پانچ برس بڑھ گئی ہے اور اب وہ ریٹائرمنٹ کے بعد پانچ برس تک سرکاری ملازمت کے فوائد سے فیض یاب ہوتی رہیں گی۔ خیال رہے کہ یو پی ایس سی کا رکن 65برس کی عمر تک سروس میں رہتا ہے۔کانگریس کے صدر کے ایچ اے ایل بنگلورو کا دورہ کرنے سے متعلق سوال پر انہوں نے کہاکہ یہ فطری ہے۔ ایچ اے ایل کے دس ہزار ملازمین کے ساتھ رافیل میں آفسیٹ پارٹنر نہیں بناکر ناانصافی کی گئی ہے۔ حکومت نے پبلک سیکٹر کی کمپنی ایچ اے ایل سے یہ کام چھین کر انل امبانی کی کمپنی کو دیا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper