روسٹن چیز اور ہولڈر نے ویسٹ انڈيز کو سنبھالا

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 13-October-2018

حیدرآباد، (یو این آئی ) روسٹن چیز (ناٹ آؤٹ 98) اور کپتان جیسن ہولڈر (52) کی نصف سنچریوں سے ویسٹ انڈیز نے ہندستان کے خلاف دوسرے اور آخری ٹیسٹ کے پہلے دن جمعہ کو بحران سے نکالتے ہوئے سات وکٹ پر 295 رن بنا لئے۔ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر راجیو گاندھی بین الاقوامی اسٹیڈیم میں پہلے بلے بازی کرتے ہوئے اپنے پانچ وکٹ صرف 113 رن پر گنوا دیے تھے۔ لیکن روسٹن چیز نے وکٹ کیپر شین ڈارچ (30) کے ساتھ چھٹے وکٹ کے لئے 69 رنز اور کپتان ہولڈر کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے 104 رن جوڑ کر اپنی ٹیم کو سنبھال لیا۔روسٹن چیز نے 174 گیندوں پر ناٹ آوٹ 98 رن میں سات چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ ڈارچ نے 63 گیندوں پر 30 رن میں چار چوکے اور ایک چھکا لگایا جبکہ ہولڈر نے 92 گیندوں پر 52 رن میں چھ چوکے لگائے۔ فاسٹ بولر امیش یادو نے ہولڈر کو وکٹ کیپر رشبھ پنت کے ہاتھوں کیچ کراکر ساتویں وکٹ کی شراکت کو توڑا۔ یادو نے اس سے پہلے ڈارچ کا بھی وکٹ لیا تھا۔26 سال کے روسٹن چیز نے ہندستان کے تیز اورا سپن بولروں کا ڈٹ سامنا کرتے ہوئے چوتھی سنچری کی جانب اپنا قدم بڑھا دیا ہے۔ ہولڈر نے اپنی آٹھویں نصف سنچری بنائی اور کپتانی کی ذمہ داری والی اننگز کھیلی۔ ہندستان کی جانب سے یادو نے 23 اوور میں 83 رن پر تین وکٹ، چائنامین بولر کلدیپ یادو نے 26 اوور میں 74 رن پر تین وکٹ اور آف اسپنر روی چندرن اشون نے 24.2 اوور میں 49 رن پر ایک وکٹ لیا۔صبح ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ ونڈیز کو راس نہیں آیا اور اس نے لنچ تک اپنے تین وکٹ محض 86 رن پر گنوا دیئے۔ ونڈیز نے لنچ سے پہلے اپنے تین اہم بلے بازوں کیران پاول (22)، كارلوس بریتھویٹ (14) اور شاي ہوپ (36) کے وکٹ گنوائے۔بریتھویٹ اور پاول نے پہلے وکٹ کے لئے 32 رن جوڑے لیکن آف اسپنر روی چندرن اشون نے انہیں رویندر جڈیجہ کے ہاتھوں کیچ کراکر ہندستان کو پہلی کامیابی دلا دی۔ پاول نے 30 گیندوں میں چار چوکے لگائے۔ اس کے بعد بریتھویٹ دیر تک نہیں ٹک سکے اور کلائی کے اسپنر کلدیپ یادو نے انہیں ایل بی ڈبلیو کر دیا۔ہوپ کو دوبارہ تیز گیند باز امیش یادو نے ایل بی ڈبلیو کیا اور لنچ تک صرف 86 رن پر ویسٹ انڈیز کے تین وکٹ نکال دیئے۔ ہوپ نے 68 گیندوں کی اننگز میں پانچ چوکے لگائے۔ اشون، کلدیپ اور امیش کو ایک ایک وکٹ ملا۔لنچ کے بعد ونڈیز کا چوتھا وکٹ جلد ہی گر گیا۔ شمرون هتمائر (12) کو کلدیپ نے ایل بی ڈبلیو کر دیا۔ کلدیپ نے پھر سنیل امبريس کو جڈیجہ کے ہاتھوں کیچ کراکر ویسٹ انڈیز کا اسکور 39 ویں اوور میں پانچ وکٹ پر 113 رنز کر دیا۔ امبريس نے 26 گیندوں میں 18 رن بنائے۔روسٹن چیز نے پھر ڈارچ کے ساتھ اننگز کو سنبھالنے کا کام کیا۔ لیکن چائے کے وقفہ سے کچھ پہلے امیش یادو نے ڈارچ کو ایل بی ڈبلیو کر اس شراکت کو توڑ دیا۔ چائے کے وقفہ کے وقت ویسٹ انڈیز کا اسکور چھ وکٹ پر 197 رن تھا۔ چائے کے وقفہ کے بعد روسٹن چیز نے ہولڈر کے ساتھ سنچری شراکت کی۔ دونوں نے اس دوران آسانی سے رن بنائے ۔ دن ختم ہونے سے کچھ پہلے یادو نے ہولڈر کا وکٹ لے کر اس شراکت کو توڑا۔روسٹن چیز اسٹمپس تک اپنی سنچری سے محض دو رن دور رہ گئے ہیں۔ ان کے ساتھ دیویندر بشو دو رنز بنا کر کریز پر ہیں۔ ہندوستان کو دن بھر چار بولروں کے ساتھ کھیلنا پڑا۔ ڈیبو فاسٹ بولر شردل ٹھاکر اپنے دوسرے اوور کی چوتھی گیند کے بعد ہی زخمی ہوکر میدان سے باہر ہو گئے۔صبح شردل ہندستان کے 294 ویں ٹیسٹ کھلاڑی بنے لیکن ان کے لیے ڈیبو یادگار نہیں رہا۔ اپنے دوسرے اوور کی چوتھی گیند کے بعد ہی وہ لڑکھڑاتے نظر آئے اور شاید پٹھے کھنچ جانے کی وجہ سے انہیں میدان سے باہر جانا پڑا۔چوتھی گیند کے بعد وہ جب لڑکھڑايے تو کپتان وراٹ اور چتیشور پجارا ان کے پاس پہنچے۔ حالیہ ایشیا کپ میں بھی شردل کو گرون چوٹ کی وجہ سے ٹورنامنٹ کے درمیان ہی وطن لوٹنا پڑا تھا اور یہاں اپنے دوسرے اوور میں ہی انہیں باہر جانا پڑا۔ شردل کے باہر جانے سے امیش یادو کو اکیلے ہی تیز گیند بازی کی ذمہ داری اٹھانی پڑی۔