ہندستان ہندوستان

سمندری طوفان تتلی سے زبردست تباہی

Profile photo of Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-October-2018

بھوبنیشور/وشاکھاپٹنم(یو این آئی)سمندری طوفان تتلی سے آندھرا پردیش، کرناٹک اور اڈیشہ میں زبردست تباہی ہوئی ہے۔ آندھرا پردیش میں اب تک 8 افراد کی ہلاکت کی خبر ہے۔ اڈیشہ میں ہزاروں افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا ہے۔ طوفان کااثر جھارکھنڈ ، بنگال اور اس سے متصل بہار کے علاقوں میں بھی دیکھا جارہا ہے۔ تتلی طوفان آج صبح اوڈیشہ کے ساحل سے ٹکرایا۔اس طوفان کی شدت کافی زیادہ ہے جس کے نتیجہ میں کئی درخت اکھڑگئے اور طیاروں کی آمدورفت بھی متاثر ہوئی ۔محکمہ موسمیات نے کہاکہ جمعرات کی صبح تقریباََ 5.30بجے یہ طوفان ٹکرایا ۔اس طوفان کے سبب اوڈیشہ کے گنجم اور گجپتی اضلاع میں بجلی کی سپلائی بری طرح متاثر رہی اور سڑکوں سے رابطہ ٹوٹ گیا۔اوڈیشہ اسٹیٹ ایمرجنسی سنٹر کے افسر صورتحال پر نظر بنائے ہوئے ہیں۔اس طوفان کا اثرآندھراپردیش کے18 اضلاع پر پڑا ہے۔ جہاں حکومت نے پہلے ہی ریڈ الرٹ جاری کردیا تھا۔طوفان کے زیراثر سریکاکلم،وجئے نگرم اور وشاکھاپٹنم میں شدید بارش ہورہی ہے جس کے پیش نظر حکومت نے ریڈ الرٹ جاری کردیا ہے۔کلنگاپٹنم ،بھیمونی پٹنم، وشاکھا پٹنم، گنگاپورم کی بندرگاہ پر خطرہ کا نشان 10لگادیا گیا ہے۔طوفان کےپیش نظر تعلیمی اداروںمیں تعطیل کا اعلان کیا گیا تھا۔ طوفان کے سبب اے پی کا ضلع سریکاکلم تاریکی میں ڈوب گیا۔اس طوفان کی رفتار 140تا150کیلومیٹر فی گھنٹہ ریکارڈ کی گئی ہے۔ساروبوجا منڈل میں مکان کے گر پڑنے کے سبب ایک شخص کی موت ہوگئی جس کی شناخت 55سالہ سوریہ راو کے طورپر کی گئی ہے جبکہ سریکاکلم میں درخت کے گر پڑنے کے سبب ایک شخص کی موت ہوگئی ہے ۔ اس کی شناخت 62سالہ نرسماں کے طورپر کی گئی ہے۔تتلی طوفان پر اے پی کے وشاکھاپٹنم کے ساتھ ساتھ اوڈیشہ کے گوپال پور اور پارادیپ میں کوسٹل ڈوپلر ویدر رراڈرس کے ذریعہ نظر رکھی جارہی ہے ۔محکمہ موسمیات کے مشاہدات میں نشاندہی کی گئی ہے کہ مغرب۔وسطی خلیج بنگال پر بنا یہ طوفان پیش قدمی کر گیا ہے ۔ طوفان کے سبب اوڈیشہ کے گوپال پوراور بہرام پور میں کئی مقامات پر سڑکوں کا رابطہ ٹوٹ گیا ہے۔اوڈیشہ کے گوپال پورمیں 102کیلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے طوفانی ہوائیں چل رہی ہیں جبکہ اے پی کے کلنگاپٹنم میں 56کیلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے طوفانی ہوائیں چل رہی ہیں۔طوفان کے پیش نظر حکومت اڈیشہ نے 5ساحلی اضلاع سے لوگوں کا تخلیہ کردیا تھا ۔ وزیراعلی نوین پٹنائک کی ہدایت کے بعد گنجم ‘ پوری ‘ کھردا ‘ کیندراپارا اور جگت سنگھ پور اضلاع کے نشیبی علاقوں میں رہنے والوں کو فوری طور پر محفوظ مقامات کو منتقلی یقینی بنایاگیا۔ گنجم میں تقریباً 1000افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کردیا گیا ہے۔ طوفان تتلی کے دوران ساحل پر ایک میٹر اونچی لہریں اٹھ رہی ہیں۔ قومی آفات سماوی راحت فورس اور اڈیشہ کی آفات سماوی انتظامی فورس کے جوانوں کو ممکنہ متاثرہ اضلاع میں متعین کردیا گیا ہے تاہم ابھی تک فوج سے مدد طلب نہیں کی گئی ہے۔ ضرورت پڑی تو فوج سے بھی مدد لی جائے گی۔حکومت نے آج اور کل تمام اسکولوں ‘ کالجوں اور آنگن واڑی مدارس کو بند رکھنے کی ہدایت دی ہے ۔محکمہ موسمیات نے اطلاع دی ہے کہ طوفان صبح اڈیشہ اور شمالی آندھراپردیش کے درمیان ساحل کو پار کرنے کے بعد دوبارہ مڑکر شمال مغرب کی سمت بڑھتے ہوئے مغربی بنگال کی طرف پیش قدمی کررہا ہے۔بھوبنیشور میں محکمہ موسمیات کے ڈائرکٹر ایچ آر بسواس نے بتایا کہ طوفان کے اثر سے ساحلی اڈیشہ کے کئی اضلاع میں بارش ہورہی ہے۔ طوفان میں آج مزید شدت پیدا ہوگئی ہے۔ ساحلی اضلاع جیسے گنجم ‘ گجپتی ‘ پوری ‘ جگت سنگھ پور ‘ کیندراپارا ‘ کردا ‘ نیا گھر ‘ کٹک ‘ جارج پور ‘ بھدرک اور بالاسور میں شدید بارش ہورہی ہے ۔ کندھامل ‘ بودھ اور دھین کنا ل اضلاع میں بھی بارش ہورہی ہے۔ محکمہ موسمیات نے بتایا کہ طوفان کے ساتھ 140سے 150کلومیٹر اور کہیں کہیں 165کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چل رہی ہیں ۔ اڈیشہ کے ساحل پر تمام بندرگاہوں پر طوفان کے خطرہ کے نشان LW4اٹھادیا گیا ہے۔ ریاستی حکومت نے فضائیہ اوربحریہ کو صورتحال کی اطلاع دے دی ہے۔ بحریہ نے تقریباً 300موٹر بوٹس بچاو اور راحت کاموں کے لئے تیار رکھے ہیں۔

About the author

Profile photo of Taasir Newspaper

Taasir Newspaper

Skip to toolbar