عوامی مقامات پر بھی اجابت خانے تعمیر کرائے جائیں : پردیپ کمار

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 05-October-2018

مین پوری (حافظ محمد ذاکر )گرام پنچایت فنڈ میں دستیاب فنڈز کو سب سے اہم کاموںپر خرچ کیا جائے، پرائمری اسکول جہاں ملک کے مستقبل کے بچے تعلیم حاصل کر رہے ہیں وہاں گرام پنچایت فنڈ سے بنیادی سہولیات فراہم کی جائیں، فنڈز کو من مانے طریقہ پر خرچ نہیں کیا جائیگا ،مقررہہدایت کے مطابق پنچا ئتوں کو پیسہ خرچ کر نا ہے، حلقہ وار ایسی گرام پنچایتیں جہاں سب سے زیادہ، یا سب سے کم فنڈز مختص کیا گیا ہے ،ایسی فہرست فوری طور پر دستیاب کرائی جائے، فراہم کردہ فنڈز کے اخراجات کا سرٹیفکیٹ دستیاب نہ کرانے والے اسسٹنٹ ترقی حکام، گرام پنچایت سیکریٹریوں کے خلاف معطلی کی کارروائی کی جائے ، سب سے زیادہ ڈیفالٹر گرام پنچایت سیکریٹری کو چارج شیٹ د ی جائے ،وہ بازار جہاں زیادہ بھیڑ رہتی ہے ان مقامات پر کمیونٹی ٹوائلٹ بنوائے جائیں، جہاں بڑی تعداد میں لوگ موجود رہتے ہیں ان جگہوں پر بنیادی سہولیات دستیاب رہیں،تمام سرکاری اسکولوں، اسپتالوں، پولیس چوکیوں میں ہیڈ پمپ چالوحالت میں رہیں، گرام فنڈ سے فوری ہینڈپنمپوں کی مرمت کرائی جائے۔ضلع مجسٹریٹ پردیپ کمار نے ریاست کے وزیر اعلی کی ترجیحی ترقیاتی پروگراموں کے جائزہ کے دوران یہ ہدایات دیں ۔انہوں نے کہا کہ میونسپلٹی میں جو نئے وارڈ شامل ہوئے ہیں وہاں کے فائدہ اٹھانے والوں کو ٹوائلٹ کی منصوبہ بندی میں فائدہ دیا گیا تھا ،لیکن موقع پر بلدیہ کی رپورٹ کے مطابق ٹوائلٹ تعمیر ہی نہیں ہوئے ،ایسے لوگوں کی نشاندہی کر کے ان کے خلاف نوٹس جاری کیا جائے ،اورفنڈز کی وصولی کی جائے ،انہوں نے ایگزیکٹیو حکام سے کہا کہ ضلع کے تمام 134 وارڈ کھلے میں اجابت کیلئے مبرا ہو چکے ہیں ،لیکن اس کے بر عکس ذرائع سے اطلاع مل رہی ہیں، ایگزیکٹیو افسر اپنے اپنے شہر اداروں میں وارڈ ممبروں ، چیر مین کے ساتھ وارڈوں میں اجابت خانہ کی تعمیر خود توثیق کریں، جن شہروں میں ایل ای ڈی کا کام باقی ہے فوری طور پر کیا جائے ،عارضی طور پر رہائش پذیر خاندانوں کیلئے اجابت خانہ تعمیر کرائے جائیں ، اور عوامی مقامات پر بھی اجابت خانہ تعمیر کرائیں جائیں ۔