مایا وتی کے الزامات پر دگوجے نے پھر دی صفائی

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 05-October-2018

بھوپال،(ایجنسی): بہوجن سماج پارٹی کی صدر مایا وتی نے بدھ کو لکھنؤ میں پریس کانفرنس منعقد کی تھی ۔ اس دوران انہوںنے کانگریس کے قومی جنرل سکریٹری اور سابق وزیر اعلیٰ دگو وجے سنگھ پر اتحاد نہ ہونے دینے کا ٹھیکرا پھوڑا تھا۔ دگو وجے سنگھ نے مایا وتی کے الزامات پر ٹوئٹر کے ذریعہ اپنی صفائی دی ہے اور خود کو بے قصور قرار دیا ہے ۔ بی ایس پی سپریمو مایا وتی نے پریس کانفرنس میں سابق وزیر اعلیٰ دگو جے سنگھ کو بی جے پی کا معاون بتاتے ہوئے کہا تھ اکہ انہوں نے ہی مدھیہ پردیش میںکانگریس کے ساتھ بہوجن سماج پارٹی کا اتحاد نہ ہونے دیا ۔انہوں نے ریاست میں دیگر علاقائی پارٹیوں سے اتحاد کی بات کہی تھی ۔ مایا وتی کے ذریعہ لگائے گئے ان الزامات پر سابق وزیر اعلیٰ دگو جوے سنگھ نے ٹوئڑ پر صفائی دی ہے ۔ انہوں نے اپنے توئٹ کے ساتھ ایک نیوز ایجنسی کی خبر اور ایک اخبار میں بیس ستمبر کو شائع خبر کو بھی شیئر کیا۔ان میں کہا گیاہے کہ مایا وتی نے ریست کے 22امیدواروں کی فہرست جاری کی اور کہا کہ پارٹی مدھیہ پردیش میں تمام 230اسمبلی سیٹوں پر الیکشن لڑے گی۔ اس کے ساتھ ہی دگوجے سنگھ نے دو ٹوئٹ کئے ہیں ۔ پہلے ٹوئٹ میں انہوں نے لکھا ہے بہن جی نے 20ستمبر کو ہی کہہ دیاتھا کہ بی ایس پی مدھیہ پردیش میں تمام 230سیٹوں پر الیکشن لڑے گی ۔ دوسرے ٹوئٹ میں 20ستمبر کو جاری خبر کی بنیاد پر دگوجے سنگھ نے لکھا ہے کہ ابمیں کیسے کانگریس بی ایس پی اتحاد کو نقصان پہنچانے کے لئے ذمہ دار ہو سکتا ہوں۔