اتر پردیش

مدھیہ پردیش کے اسمبلی انتخابات طے کریں گے ہندوستانی سیاست کا رخ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 09-October-2018

لکھنؤ – (یو این آئی) سماج وادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو نے منگل کو کہا کہ مدھیہ پردیش اسمبلی انتخابات ہندوستانی سیاست کے لئے بہت ہی اہمیت کے حامل ہیں۔

مدھیہ پردیش کے کھجوراہو میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے مسٹر یادو نے کہا کہ بی جے پی حکومت نے مدھیہ پردیش میں عوام کو بری طرح سے مایوس کیا ہے۔ مدھیہ پردیش میں 11 ہزار کسانوں نے خودکشیاں کی ہیں۔ بی جے پی حکومت کو کارپوریٹ گھرانے چلا رہے ہیں۔خواتین اور بیٹیوں کے ساتھ جرائم میں اضافہ ہورہا ہے۔ دو انجن کی حکومتوں کا حال برا ہے۔ عوام تبدیلی چاہتے ہیں بی جے پی نے ان کے ساتھ دھوکہ کیاہے۔

مسٹر یادو نے کہا’’ اس بار ہم لوگ مدھیہ پردیش میں مقامی طور پر لمبی جدوجہد کرنے آئیں گے۔ آنے والے وقت میں پارٹی گونڈوانا گڑتنتر پارٹی کے ساتھ اتحاد کر کے انتخاب لڑے گی، لوگ اب اس بات کو قبول کرنے لگے ہیں کہ سماج وادی پارٹی اور سماجوادی نظریات ہی بی جے پی کا متبادل ہو سکتے ہیں ”۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی ہر جگہ نفرت پھیلا رہی ہے۔ گجرات میں اس کا ایک بار پھر گھناوناچہرہ سامنے آئے ہے۔ حکومت کے وزیر اور افسران ملکر غیرقانونی کھدائی کا کاروبار کر رہے ہیں۔بی جے پی حکومت کی زیادہ تر اسکیمیں ناکام رہی ہیں۔ بی جے پی صرف سوشل میڈیا پر کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی شکست سے ملک میں بھائی چارہ اپنے آپ قائم ہو جائے گا۔

مسڑیادو نے کہا کہ مدھیہ پردیش میں پڑھے لکھے نوجوان بے روزگار ہیں۔ قبائلی خواتین کے خلاف جرائم میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔ ویاپم گھوٹالے میں جس نے بھی آواز اٹھائی اسے موت کی نیند سلا دیا گیا۔ نفرت کا ہر طرف بول بالا ہے۔ گیسٹ ٹیچروں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جا رہاہے۔

انہوں نے کہا کہ کسانوں کے مفاد میں اتر پردیش میں سماج وادی حکومت کے وقت کافی کام ہوئے تھے۔ سماج وادی حکومت کے کام کا مقابلہ نہ بی جے پی کر سکتی ہے اور نہ ہی کانگریس ۔ انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی کام کر تی ہے جبکہ بی جے پی کام بگاڑتی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper