نیا بہار نئی شکل میں ابھرکر سامنے آئے گا

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 09-October-2018

پٹنہ (مشتاق احمد)گورنر لال جی ٹنڈن نے کہا ہے کہ منتقلی کو روکنے کےلیے صنعتی کاروبار کا فروغ ضروری ہے۔ صنعت کاری کی طاقت پر ہی ریاست خوشحال ہو سکتا ہے۔ایمانداری محنت اور ویزن ان تینوں کے سہارے ہی نوجوان صنعت کار ریاست میں صنعتی ترقی کر سکتے ہیں ۔جس کے نتیجے میں نیا بہار ایک نئی شکل میں ابھر کر سامنے آئے گا انہوں نے بہار انڈسٹری ایسو سی ایشن کے پلیٹینم جبلی سال کے تحت بی آئی اے اور بھارتیہ ڈاک محکمہ کے مشترکہ زیر اہتمام منعقد خصوصی کور کے اجراء کے لیے منعقد پروگرام سے خطاب کر رہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ بہار کی صلاحیت باہر میں جاکر مختلف شعبوں میں نمایاں مظاہرہ کر رہی ہے۔ آج ضرورت ہے کہ ریاست کی معاشی ترقی کے لیے نوجوان اپنی ایمانداری صلاحیت،محنت اور ویزن کا بھرپور استعمال کرے ۔گورنر نے کہاکہ صنعت کاری سے ہی ریاست میں حکومت کے ذریعہ سماج کے ہر طبقہ کی فلاح کے لیے کوئی نہ کوئی منصوبہ چلایاجارہا ہے ۔حکومت کی پالیسیوں سے اور دسیتاب وسائل سے سبھی لوگ براہ راست مستفید ہورہے ہیں ۔گورنر نے کہا کہ بد عنوانی پر قابو پانے کےلیے ٹھوس پہل کی گئی ہے۔تاکہ منصوبوں کا فائدہ سیدھے غریبوں تک پہونچے۔ گورنر نے کہا کہ زراعت میں فوڈ پروسیسنگ اور ویلو ایڈیشن کے توسط سے صنعت کے شعبہ میں کافی ترقی ہوسکتی ہے۔جناب ٹنڈن نے کہا کہ مویشی پروری کے فروغ سے دودھ پیدوار کو بڑھاتے ہوئے اس سے متعلق صنعت کو فروغ دیا جاسکتا ہے۔ گورنر نے کہا کہ محنت اور ایمانداری کے بیچ میں وسائل زیادہ رکاٹ نہیں بنتے۔انہوں نے کہا کہ بھارت میں ایسا پہلی بار ممکن ہوا ہے کہ صنعت اور پیدوار کے شعبہ میں وسیع امکانات کی امید جگی ہے ۔انہوں نے کہا کہ صارفین اور پیدوار کنندہ دونوں ایک دوسرے کے بدل ہیں دونوں کو ایک دوسرے کے مفاد کا خیال رکھنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ نوجوان صنعت کاروں کو ریاست میں دسیتاب وسائل کو دھیان میں رکھتے ہوئے دورحاضر کی ضرورتوں کے مطابق نئی صنعتوں کے فروغ کی طرف بڑھنا چاہیے ۔بہار میں قدرتی وسائل کی کمی نہیں ہے بہار کی تاریخ بھی شاندر رہی ہے۔ یہاں کے ہونہار صنعت کاروں کے پاس علم محنت اور ایمانداری بھی ہے۔ضرورت ہے کہ ریاست کی صنعتی ترقی کے لیے نئ سرمایہ کاری پر خاص توجہ کی جائے۔