کانگریس نے رافیل معاملہ میں سی اے جی کو نئے ثبوت سونپے

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 05-October-2018

نئی دہلی، (یو این آئی) کانگریس نے رافیل جنگی طیارہ سودے پر آج پھر سے کمپٹرولر اینڈ آڈیٹر جنرل (سی اے جی) کو تین نئے ثبوتوں کے ساتھ میمورندم سونپا اورکہاکہ یہ بہت بڑا گھپلہ ہے اور اس کی وسیع جانچ کرائی جانی چاہئے۔سی اے جی سے ملاقات کرنے گئے کانگریس کے سینئر لیڈر آنند شرما ، جے رام رمیش، رندیپ سنگھ سرجے والا، آر پی این سنگھ اور رمیش تنکھا نے نامہ نگاروں سے کہاکہ سی اے جی نے پارٹی کے نمائندہ وفد کے ذریعہ پیش کئے گئے ثبوتوں کی بنیاد پر معاملہ کی تفتیش کا یقین دلایا ہے۔مسٹر شرما اور سرجے والا نے کہاکہ میمورنڈم کے ذریعہ سی اے جی کو بتایا گیا ہے کہ کانگریس رافیل سودے کے تعلق سے جو بات شروع سے کہہ رہی ہے ان حقائق کی تصدیق فرانس کے سابق صدر فرانسوا اولاند نے گزشتہ دنوں کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت ہند نے ہی ایچ اے ایل کی جگہ انل امبانی کی کمپنی کو رافیل کا ٹھیکہ دیا ہے۔ مسٹر اولاند اور وزیراعظم نریندر مودی کے مابین یہ معاہدہ ہوا تھا۔انہوں نے کہاکہ سی اے جی کو وزارت دفاع میں جوائنٹ سکریٹری ایکویزشن کے ذریعہ اس سودے پر کئے گئے اعتراضات کی معلومات بھی دی گئی ہیں۔ جوائنٹ سکریٹری نے سوال اٹھایا تھا کہ یہ سودا تین گنا زیادہ رقم میں کیوں کیا جارہا ہے ۔ بعد میں ان کے اعتراض کو درکنار کرکے ایک دیگر سے اس سودے کو منظوری دلائی گئی اور اس افسر کو عہدے میں ترقی دی گئی ہے۔کانگریس کے لیڈروں نے کہاکہ اسکے ساتھ ہی یہ بھی شکایت کی گئی ہے کہ میڈیا کے کچھ حصوں میں خبریں آئی ہیں کہ سی اے جی جلد ہی حکومت کو رافیل معاملہ میں کلین چٹ دے دے گا۔ انہوں نے کہاکہ اس سے واضح ہے کہ آئینی ادارہ پر حکومت کو کلین چٹ دینے کے لئے دباو بنایا جارہا ہے۔