کجریوال کا سوال:تیواری ہندو تھاتواس کا قتل کیوں ہوا؟

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 01-October-2018

نئی دہلی،(سیدشمیم احمد): اتر پردیش کی راجدھانی لکھنؤ میں جمعہ کی دیر رات پولس کی گولی سے ہلاک ہوئے وویک تیواری کے مسئلے پر یوگی سرکار کو اپوزیشن گھیر رہی ہے ۔کانگریس کے علاوہ دیگر پارٹیوں نے بھی نشانہ سادھنا شروع کر دیا ہے ۔ دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے اس معاملے کو الگ ہی رنگ میں بر سر اقتدار بی جے پی سرکار سے وال کیا ہے کہ وویک تیواری تو ہندو تھا پھراس کا قتل کیوںکیا گیا؟ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے اتوار کو ٹوئٹ کر کے وویک تویاری قتل معاملے پر بی جے پی کو گھیرتے ہوئے کاہ کہ وویک تیواری تو ہندو تھا پھر اس کوانہوں نے کیوں مارا۔بی جے ی کے لیڈر پورے ملک میں ہندو لڑکیوں کا ریک کرتے گھومتے ہیں۔ انہوںن کہا کہ اپنی آنکھوں سے پردہ ہٹائیے۔ بی جے پی ہندوؤں کے مفاد میں نہیں ہے ۔اقتدار حاصل کرنے کے لئے اگر انہیں سارے ہندوؤں کا قتل کرانا پڑے تو یہ دو منٹ نہیں سوچیں گے۔انہوںنے ایک ٹوئٹ میں وویک قتل کی قانونی جانچ نہ ہونے کا بھی دعویٰ کیا۔ اس کے بعد انہوںنے مقتول کی بیوی کلپنا تیواری سے فون پر بات چیت کرنے کی اطلاع دیتے ہوئے کاہکہ ایک بے گنا ہ ہندو کو دن دہاڑے گولی مار دی گئی ۔ان کے قاتل سے تھانے میںبیٹھا کر پریس کانفرنس کرواتے ہو ۔ آپ کا وزیر ان کومجرم اعلان کرتا ہے ۔ ان کے لئے جب ہم انصاف مانگتے ہیں تو بی جے پی والے کہتے ہیں کہ ہماری سوچ سطحی ہے ۔