کسانوں پر مظالم کے خلاف بھاکپا مالے کامظاہرہ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 05-October-2018

بیتیا، (انیس الوریٰ)4 اکتوبر کو بھاکپا مالے کسان مہاسبھا آئیسا نے دہلی میں کسانوں پر لاٹھی چارج اور آنسو کے گولے سے حملہ کے خلاف ملک بھر میں اس کی مذمت کے تحت بیتیا کلکٹریٹ گیٹ پر وزیر اعظم مودی کا پتلہ نذر آتش کیا۔ پتلہ نذرآتش کرنے کے بعدلوگوں سے خطاب کرتےہوئے لیڈروں نے کہا کہ دو اکتوبر کو اپنی مختلف مطالبے کو لے کر دہلی میں پرامن مظاہرہ کررہے کسانوں پر ظلم زیادتی کے خلاف بھاکپا مالے اور اکھیل بھارتیہ مہاسبھا اور آئیسا نے آج ملک بھر میں یوم اختلاف کے طرح مودی کاپتلہ نذر آتش کیا۔ آگے بھاکپا مالے کے لیڈروں نے دہلی کے غازی پور بارڈر پر کسانوں کے پرامن مارچ کو روکنے اور مظاہرہ کررہے کسانوں پر ظلم کی سخت مذمت کی ہے۔ایک طرف حکومت موولانچنگ کررہے لوگوں کو کھلےطور سے چھوٹ دے رکھی ہے۔ تو دوسری جانب اپنے پرامن مظاہرے کر رہے کسانوں کےاوپر لاٹھیاںچلارہی ہیں۔ اسی حکومت کی کسان مخالف پالیسی کے تحت آج کسان خودکشی کرنے پر مجبور ہیں۔ بہار میں بھی کسانوں کے خودکشی کاشروع ہوچکا ہے۔ کسانوں کادمن کر مودی حکومت ستا میں بنے رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ فصلوں کی لاگت کا ڈیوڑھا قیمت کے ساتھ 50فیصدمنافعہ دلانے کو لے کر ، فصلوں کی خریداری کاحقدینے، گنا کا بقایہ رقم دینے کو لے کر ، بجلی کے بڑھے قیمت کو واپس لینے، کے مطالبے پر جوڑدینے کے لئے یہ مارچ منعقد کیاگیاتھا۔ کسان دہلی کے راج گھاٹ تک پرامن مارچ کرنا چاہتے تھے۔ جسے حکومت نے طاقت کا مظاہرہ کر دہلی بارڈر پرہی روک دیاتھا۔ کسان مہاسبھا اور آئیسا نے مطالبہ کیا ہے کہ کسانوں کے سبھی طرح کے قرض جلد معاف کے ساتھ ساتھ ان کی سبھی مطالبے کو جلد پورا کیاجائے۔ اس موقع پر مالے لیڈر مجمل میاں، سریندر چودھری، کسان یونین کے لیڈرونود کشواہا، ونئے پربھاکر، آئیساضلع صدر سنجیت کمار، آئیسا لیڈر سودھانشو شیکھر، رام بابو کمار، سنیل کماریادو، راماشنکررام، وغیرہ نے اپنی باتیں رکھیں۔