گاندھی جی کے ادھورے خوابوں کو شرمندئہ تعبیر کررہی ہے مودی حکومت : رادھا موہن

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 13-October-2018

موتیہاری (محمداکرم)مہاتما گاندھی ، اٹل بہاری واجپئی اور جے پرکاش نارائن کے ذریعہ ملک میں تبدیلی کی خاطر چلائے گئے مہم سے سرزمین چمپارن کا گہرا تعلق رہا ہے ۔ جہاں مہاتما گاندھی نے ملک کو گوروں کی غلامی سے آزاد کرانے کے لئے تحریک چلائی ، وہیںاٹل بہاری واجپئی اور لوک نائک جے پرکاش نارائن نے ملک میں بد عنوانی و آمریت کے خلاف مہم چھیڑی تھی ۔آج ان تینوں عظیم شخصیات کے ادھورے خوابوں کو شرمندئہ تعبیر کرنے کا کام مودی حکومت کر رہی ہے ۔ مذکورہ باتیںجے پی کی یوم پیدائش کی مناسبت سے مقامی ٹائون ہال میدان میں منعقد یوا سنکلپ سمیلن کو خطاب کرتے ہو ئے مرکزی وزراعت رادھا موہن سنگھ نے کہی ۔ انہوں نے کہا کہ جہاں ایک جانب غریب کا بیٹا نریندر مودی جب اقتدار کی کرسی پر پہنچے تو انہوں نے ملک کی عظمت واپش لانے کے لیئے غریب و کسانوں کی ترقی اور نوجوانوں کو روزگار مہیا کرانے کے لئے جہد مسلسل کر رہے ہیں ۔ وہیں دوسری جا نب ملک کے اقتدار پر ۴۸ سالوں قابض رہنے والی پارٹی صرف غریبوں اور کسانوں کی بھلائی کا کھوکھلا دعوی کرتے رہے ہیں ۔ جناب سنگھ نے کہا کہ آج جب ملک تبدیلی کی راہ پر گامزن ہے حزب مخالف اپنی دوکانداری بند ہو تا دیکھ متحد ہونے کی کوشش میں لگی ہے ۔ لیکن اس نا م نہاد اتحاد میں بھی وہ کامیاب نہیں ہو پا رہے ہیں ۔ پچھلے انتخاب میں وہ فرقہ اور ذات پات کے نام پر سماج کو توڑنے کی ناکام کوشش کرتے رہے ہیں ۔ ان سب میں انہیں منھ کی کھانی پڑی ۔ اب ایک بار پھر اعلی طبقہ کو الگ کرنے کی سازش کرہے ہیں۔ حالانکہ مودی حکومت سب کا ساتھ سب کی ترقی کے خطہ پر چل رہی ہے ۔ انہوں نے کہا ۲۰۲۲؁ ء تک نئے ہندستان کی تعمیر ہو گی ۔ جسمیں نوجوانوں کا اہم کردار ہو گا۔ مرکزی وزیر موتیہاری لوک سبھا حلقہ کا ذکر کرتے ہو ئے کہا کہ موجودہ وقت یہاں کے بیس ہزار سے زائد کسانوں کا دودھ دہلی جا رہا ہے ۔ کسانوں کی آمد نی بڑھی ہے ۔ ہزاروں کو روزگار ملا ہے ۔ آئند ہ سال جنوری میں مٹھ بنواری میں مدر ڈیری کی شروعات کی جا ئے گی ۔ مہاتما گاندھی سینٹرل یونیورسیٹی کا ذکر کرتے ہو ئے جناب سنگھ نے کہا کہ یہاں سے طلبہ اعلی تعلیم حاصل کر ضلع سے باہر ضلع کا نام روشن کر رہے ہیں۔ انہوں نے پپرا کوٹھی کو کسانوں کی تیرتھ ستھلی بتاتے ہو ئے کہا کہ زراعت کے میدان میں نئی تکنیک و سائنسی طریقے سے کھیتی کو لیکر کافی کام ہوا ہے ۔ ریاست کے وزیر صحت منگل پانڈے نے حزب اختلاف کے لیڈر تیجسوی یادو پر طنز کرتے ہو ئے کہا کہ ٹویٹر بوائے محض ۲۹ سال کی عمر میں ۵۲ مالیت کے مالک بن بیٹھے ہیں ۔ جسمیں ۴۷ زمین و پانچ جگہوں پر مکان شامل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بات بات ٹیویٹ کرنے والے جناب یادو کو نوجوانوں کے سامنے اس بات کا خلاصہ کرنا چاہئے کہ اتنی کم عمر میں اتنی مالیت کے مالک کیسے بن بیٹھے ۔ انہوں نے کہا کہ راجد کے ایک ہی خاندان کے پاس ۱۴۱ قطعہ اراضی ہے ۔ جناب پانڈے نے کہا کہ ایک طرف جہاں کانگریس کے اقتدار میں بد عنوانی پاکدامنی بن گیا تھا ۔ اس دوران راجد نے بہار میں جم کر لوٹ کھسوٹ مچائی ۔جبکہ این ڈی اے حکومت مسلسل بد عنوانوں کے خلاف مہم چلارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پی ایم مودی ایک جانب جہا ں غریبی ، ناخواندگی ، بد عنوانی اور گندگی ہٹانے کے لئے کام کر رہی ہے ۔ وہی حزب اختلا ف کے پاس محض مودی ہٹائو کا ہی نعرہ بچا ہے ۔ انہوں نے کہا آئند انتخاب میں ایک بار پھر چمپارن تاریخ رقم کرے گا۔ یہاں کی تمام سیٹوں پر این ڈی اے اتحاد کا قبضہ بر قرار رہے گا۔ یوتھ بھارتیہ جنتا پارٹی کے ریاستی صدر نیتن نوین نے یوا مورچہ کے ممبران سے قومی صدر امیت شاہ کے منتر بوتھ جیتوچنائو جیتوں کو اپناتے ہو ئے آئندہ پارلیامانی انتخاب میں پھر سے نریندر مودی کی حکومت بنانے کی اپیل کی ۔ موقع پر وزیر سیاحت پرمود کمار نے کہا کہ جو خود چور ہیں وہی دوسروں پر الزام لگا رہے ہیں ۔ آج پردہ فاش ہونے کے خوف سے سب آپس میں گٹھ جوڑ کر رہے ہیں ۔ جناب کمار نے کہا کہ چوروں کا گٹھ جوڑ یہ ثابت کر رہا ہے کہ سیوک ایماندار ہے ۔ وہیں کوآپریٹو کے وزیر رانا رندھیر نے کہا کہ نو جوانوں کے بل پر ملک میں بڑی تبدیلی ہو رہی ہے ۔ سمیلن کی صدارت بھاجپا یوا مورچہ کے ضلع صدر نیرج مشرا و نظامت مہا منتری مارٹنڈ نارائن نے کی ۔ پروگرام سے ضلع صدر راجندر گپتا، ایم ایل سی ببلو گپتا، ایم ایل اے سچندر سنگھ ، شیام بابو یادو، کسان مورچہ کے ریاستی صدر اکھلیش کمار سنگھ ، پرمود شنکر سنگھ ، ڈاکٹر اتل کمار ، اقلیتی مورچہ کے ضلع صدر محب الحق، پنڈت چندر کشور مشرا، ڈاکٹر لال بابو پرساد، اروند کمار وغیرہم نے خطاب کئے ۔