سیاست سیاست

حکومت معیشت میں شفافیت اوراستحکام لائے: منموہن

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 09-November-2018

نئی دہلی،(یو این آئی) سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے ‘نوٹ بندی کے دو سال پورے ہونے کے موقع پر مودی حکومت کی معاشی پالیسیوں پر حملہ کرتے ہوئے آج کہا کہ حکومت کو ہندوستانی معیشت میں شفافیت اور استحکام یقینی بنانی چاہئے۔ وزیراعظم نریندر مودی دو سال پہلے 8 نومبر کی رات میں آٹھ بجے ‘نوٹ بندی کااعلان کرتے ہوئے اس وقت رائج 500 اور 1000 کے نوٹوں کو غیر قانونی قرار دیا تھا۔ مسٹر سنگھ نے ‘نوٹ بندی کو بدقسمتی اور بے سوچے سمجھے نفاذ کرنے والا منصوبہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے ہر شخص کی زندگی متاثر ہوئی۔، چاہے وہ کسی عمر، صنف، مذہب یا ذات پات یا کاروبار سے وابستہ ہو۔انہوں نے حکومت کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ اسے ایسے اقدام نہیں کرنے چاہئیں جس سے معیشت اور مالیاتی بازار میں غیریقینی کی صورت حال پیدا ہوا۔ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ مودی حکومت کے ذریعہ سال 2016 میں کی گئی نوٹ بندی کے اعلان کے دو سال مکمل ہوگئے ہیں۔ اس سے ہندوستانی معیشت اور سماج میں جو تباہی مچی، وہ سب کو دکھائی دے رہی ہے۔ نوٹ بندی نے ہر شخص کو متاثر کیا۔ میں حکومت سے درخواست کرتا ہوں کہ معاشی پالیسیوں میں شفافیت اور استحکام قائم رکھیں۔ آج کا دن یہ یاد رکھنے کے لئے کس طرح غلط معاشی پالیسیوں کی وجہ سے پورا ملک لمبے عرصے تک متاثر ہوسکتا ہے۔ یہ دن یہ بھی سمجھاتا ہے کہ معاشی پالیسیاں اچھی طرح سے غوروفکر کے بعد ہی بنانی چاہئیں۔سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے کہا کہ وقت کے ساتھ نوٹ بندی کے زخم زیادہ واضح ہونے لگے ہیں۔ اکثر کہا جاتا ہے کہ وقت سبھی کے زخم بھر دیتا ہے لیکن نوٹ بندی کے معاملے میں بدقسمتی سے ایسا نہیں ہوا۔ نوٹ بندی کے بعد مجموعی گھریلو پیداوار (جی ڈی پی) کی شرح میں گراوٹ تو آئی لیکن ابھی ا سکے برے اثرات رفتہ رفتہ کھل کر لوگوں کے سامنے آرہے ہیں۔انہوںنے چھوٹے اور متوسط صنعتوں کو معیشت کی بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندی کے اثرات سے باہر آنا ابھی باقی ہے۔ اس کا روزگار دینے پر براہ راست اثر پڑا ہے کیونکہ معیشت ہمارے نوجوانوں کے لئے روزگار پیدا نہیں کرپارہی ہے۔ مالی بازار اتھل پتھل کی شکار ہے کیونکہ نوٹ بندی کی وجہ سے نقدی کے مسائل پیدا ہوئے جس سے غیر بینکنگ مالی کمپنیوں پر اس چیز نے بہت ہی برا اثر ڈالا۔ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ اب بھی نوٹ بندی کے پورے اثرات کو سمجھنا اور اس کااحسااس کرنا باقی ہے۔ گرتی ہوئی کرنسی اور خام تیلوں کی قیمتوں میں اضافے اور معیشت میں مچی اتھل پتھل شروع ہوگئی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper