ہندستان ہندوستان

بھیم رائو امبیڈ کر نے دلتوں سے سماجی امتیاز ی سلوک کے خلاف مہم چلائی تھی:تیج پرتاپ یادو

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 07-November-2018

مین پوری (حافظ محمد ذاکر )ہندوستانی آئین کے معمار اور بھارت رتن بابا صاحب ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر کا 62 واں یومِ پیدائش سماجوادی پارٹی کے ضلع دفتر میں منایا گیا، مین پوری کے سانسد تیج پرتاپ یادو پارٹی کے سینئر لیڈران اور کارکنوں نے گلہائے عقیدت پیش کیا ۔ممبر پارلیا منٹ ییج پرتاپ سنگھ یادو نے کہا کہ بابا صاحب ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر عوام میں مقبول ِ تھے، صرف اتنا ہی نہیں بابا صاحب ایک قانون داں، ماہر اقتصادیات، سیاست داں اور اصلاح ِ معاشرہ کی فکر کر نے والے تھے ،انہوں دلت بدھ مت تحریک کو حوصلہ افزائی کی اور دلتوں سے سماجی امتیاز کے خلاف مہم چلائی تھی،وہ آزاد بھارت کے پہلے قانون و انصاف کے وزیرتھے ، بھارتی آئین کے معمار اور بھارت میں جمہوریت بھی آپ ہی کی دین ہے ۔ضلع صدر مسٹر کھمان سنگھ ورما نے بتایا کہ ڈاکٹر امبیڈکرپیشہ ورانہ زندگی کے ابتدائی حصے میں وہ معشیت کے پروفیسر رہے، اور وکالت بھی کی اور بعد کی زندگی سیاسی سرگرمیوں میں گزاری 1956میں انہوں نے بودھ مذہب کو اپنا یا ،1990 میں انہیں بھارت رتن بھارت کے سب سے اعلی شہری اعزاز سے نوازا گیا۔راج کمار یادو عرف راجو یادو صدر ممبر اسمبلی نے کہا کہ ڈاکٹر بھیم راؤ کو اپنی ذا ت کی وجہ سے سماجی مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا،اسکول کی تعلیم کے قابل ہونے کے با وجود بھیم راؤ کو مختلف قسم کی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا تھا،ان کے خاندان کے دوست اور مصنف داد کیلوسکر کی طرف سے لکھی ‘‘بودھ کی سوانح عمری ‘‘ان کوہدیہ دی گئی تو اسے پڑھ کر انہوں نے پہلی بار’گوتم بدھ‘اور ’بدھ مت‘کو سمجھا اور ان کی تعلیم سے متاثر ہو ئے۔ برجیش کٹھیریا کشنی ممبر اسمبلی نے بتایا کہ بھارت رتن ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر نے کہا تھا کہ ‘‘چھاچھوت‘‘ غلامی سے بھی بدتر ہے، امبیڈ کر بڑودہ ریاست کی طرف سے تعلیم یافتہ تھے، انہیں مہاراجہ گایک واڑکا فوجی سیکریٹری مقرر کیا گیا، لیکن ذات پات امتیاز ی سلوک کی وجہ سے کچھ ہی وقت میں انہیں یہ کام چھوڑنا پڑا ،انہوں نے اس واقعہ کو اپنی سوانح عمری میں بیان کیا ہے۔ 1927 تک ڈاکٹر امبیڈکر نے چھاچھوت کے خلاف وسیع اور فعال تحر یک آغاز کر نے کا فیصلہ کیا. انہوں نے عوامی تحریکوں، ستیہ گروہ ، اور جلوسوں کے ذر یعہ پینے کے پانی کی عوامی وسائل معاشرے کے تمام طبقوں کیلئے کھلوانے کے سا تھ ہی انہوں نے دلتوں کو بھی ہندو مندروں میں داخل کرنے کا حق دلانے کیلئے جدوجہد کی ۔ شہر صدر مین پوری مسٹر ہردیش کمار عرف جانی نے کہا کہ ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر نے’’ ہڑپا‘‘کے وقت سے چلی آ رہی دلت رواج کو بند کرانے میں بہت ہی اہم کردار ادا کیا ہے،ان دلت طبقے کے ایک کانفرنس کے دوران دیئے گئے بیان نے کولہاپور ریاست کے مقامی حکمران شاہو چہارم کو بہت متاثر کیا، جب امبیڈکر کے ساتھ کھانا کھانا قدامت پسند معاشرے میں ہلچل مچا گیا۔اس موقع پرسپا کے چھوٹے بڑے نیتا موجود رہے ۔

About the author

Taasir Newspaper