فن فنکار

بیٹے سرفراز نے قادر خان سے وابستہ ایک بڑا راز کھولا ، جان کر چاہنے والوں کی آنکھیں ہوجائیں گی نم

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 11-January-2019

بالی ووڈ کے مشہور اداکار قادر خان سال کی شروعات ہوتے ہی اس دنیا کو الوداع کہہ گئے ۔ طویل بیماری کی وجہ سے قادر خان نے کناڈا میں یکم جنوری کو آخری سانس لی ۔ خبروں کے مطابق قادر خان کی موت پر بالی ووڈ سے کوئی بھی خاص شخص شامل نہیں ہوا ، جس پر ان کے بیٹے سرفراز کی ناراضگی بھی سامنے آئی ۔ لیکن اسی درمیان سرفراز نے اپنے والد سے وابستہ ایک بڑا راز بھی کھولا ، جس کو سننے کے بعد ان کے چاہنے والوں کی آنکھیں نم ہوگئیں

قادر خان کی وفات کے بعد بیٹے سرفراز نے میڈیا سے ملاقات کے دوران بتایا کہ ان کے والد ہم تینوں بھائیوں اور ان کے چاہنے والوں میں کوئی فرق نہیں سمجھتے تھے ۔ بلکہ وہ ہمیشہ یہی کہتے تھے کہ جس دن ہم میں سے کسی نے ان کا خیال نہیں رکھا ، تو ان کے چاہنے والے ان کا خیال رکھیں گے اور واقعی ہم ایسا دیکھ بھی رہے ہیں ۔

قادر خان پروگریسیو سوپرانیوکلیر پالسی ڈس آرڈر نام کی بیماری سے متاثر تھے اور آخری مرتبہ سال 2015 میں فلم دماغ کی دہی میں نظر آئے تھے ۔ قادر خان طویل عرصہ سے کناڈا میں اپنے بیٹے سرفراز اور بہو شائستہ کے ساتھ رہے تھے ۔ قادر خان نے 300 سے زیادہ فلموں میں اداکاری اور ڈائیلاگ لکھنے کا کام کیا ۔ اپنی بلند آواز اور غضب کی کامک ٹائمنگ کیلئے مشہور قادر خان نے کئی سپرہٹ فلمیں بھی دیں ۔

نوے کی دہائی میں گووندا اور قادر خان کی جوڑی کو ہٹ فلموں کیلئے جانا جاتا تھا اور ان دونوں نے دولہے راجا ، قلی نمبر ون ، راجا بابو اور آنکھیں جیسی فلموں میں کام کیا ۔ اس کے علاوہ وہ قلی میں امیتابھ کے ساتھ ، ہمت والا میں جتیندر کے ساتھ اہم کردار بھی نبھا چکے ہیں ۔

About the author

Taasir Newspaper