سیاست سیاست

ارون جیٹلی کا ’دی ہندو‘ پر جھوٹ کو زندہ کرنے کا الزام

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 11-February-2019

نئی دہلی،( یواین آئی) بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سینئر لیڈر اور مرکزی وزیر ارون جیٹلی نے انگریزی اخبار ’دی ہندو‘ میں رافیل سے متعلق رپورٹ کو لے کر اخبار کے سابق ایڈیٹر این رام پر الزام لگایا کہ وہ ایک جھوٹ كوادھورے دستاویز کے سہارے زندہ کرنے اور حکومت پر لوگوں کا اعتماد توڑنے کی کوشش کر رہے ہیں۔امریکہ سے علاج کراکر واپس لوٹنے کے بعد مسٹر جیٹلی نے اپنے پہلےبلاگ میں لکھا’’رافیل سودا نہ صرف ہندوستانی فضائیہ کی جنگی صلاحیت کو مضبوط کرتا ہے بلکہ سرکاری خزانے کے لئے ہزاروں کروڑ روپے فراہم کرتا ہے۔ جب اس کا جھوٹ ڈہہ گیا، تو اس جھوٹ کو دوبارہ زندہ کرنے کے لئے ایک نامکمل دستاویزات پیش کیا گیا۔ اس جھوٹ کے تخلیق کاروں کو لگا کہ اس ادھورے دستاویزات سے وہ عوام کا حکومت پر سےاعتماد ختم کردیں گے‘‘۔مسٹر جیٹلی نے کہا کہ کہ گزشتہ دو ماہ میں بہت سی جعلی مہم دیکھے گئے ہیں۔ ان میں سے ہر ایک مہم ناکام رہی۔ جھوٹ کی عمر لمبی نہیں ہوتی ہے۔ اسی لئے اپوزیشن ’مجبورو متضاد‘ ایک جھوٹ کے بعد دوسرے جھوٹ پر کھیل رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2008-2014 کے درمیان بینکوں میں لوٹ مار کرنے والوں نے الزام لگایا کہ صنعتی قرض معاف کئے گئے ہیں، ایک بھی روپیہ معاف نہیں کیا گیا۔اس کے برعکس، نادہندگان کو سسٹم سے باہر کر دیا گیا ہے۔ اقتصادی مجرموں کوبھاگنے دینے کے لئے حکومت اور اس کے وزراء کی ساز باز کا جھوٹ تب کھل کرسامنے آ گیا جب تفتیشی ایجنسیاں ایک کے بعد کئی اہم نادہندگان اور بچولیوں کو واپس لانے میں کامیاب ہو رہی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ جی ایس ٹی کے خلاف مہم نافذ ہونے کے محض اٹھارہ ماہ کے اندر ہی ختم ہو گیا۔یہ نظام ٹیکس کو کم کرنے، چھوٹے کاروباریوں کو چھوٹ دینے اور ٹیکس ادا کرنے والے اور حکام کے انٹرفیس کو ختم کرکے بدعنوانی / ہراسانی کو ختم کرنے کے لئے ایک صارف دوست اقدامات کا ذریعہ بن گیا۔

About the author

Taasir Newspaper