ریاست

دربھنگہ میں وکلاء کا احتجاجی مارچ اور مظاہرہ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-February-2019

دربھنگہ، (عبدالمتین قاسمی ) بار کونسل آف انڈیا اور اسٹیٹ بار کونسل کی اپیل پر دربھنگہ کے وکلاء نے احتجاجی جلوس نکالااور مطالبات کی حمایت میں نعرے لگائے ۔ دربھنگہ بار ایسوسی ایشن کے صدر روی شنکر پرساد اور جنرل سکریٹری کرشن کمار مشر کی قیادت میں سوموار کو سینکڑوں وکیل عدالت کیمپس سے روانہ ہوئے اور لہریاسرائے ٹاور ، کلکٹریٹ اور ضلع جج سیل کے سامنے مظاہرہ کیا۔ وکلاء کے مطالبات میں صوبہ کے تمام عدالت احاطہ وکیل یونین کے عمارت کی تعمیر ، وکیل کے بیٹھنے کا معقول انتظام ، لائبریری ، ای لائبریری ، بیت الخلاء ،کینٹن اور موکل کے بیٹھنے کا انتظام کرنے ۔ نئے وکیل کو پانچ سال تک دس ہزار روپئے وظیفہ ، وکیل اور اہل خانہ کو لائف انسورنش ، ہنگامی موت پر پچاس لاکھ معاوضہ ، پنشن کا نظم ،لوک عدالت کاکام وکیل سے کرایا جائے ، مناسب قیمت پر زمین کا انتظام ، ٹیوبنل کمیشن میں وکیلوں کی بحالی ، وکیلوں کے بہبود کیلئے پانچ ہزار کڑور روپئے مختص کئے جائیں ۔ مظاہرہ کے بعد یونین کے صدر اور جنرل سکریٹری کی قیادت میں نمائندہ وفد نے ضلع مجسٹریٹ تیاگ رنجن ایس ایم اور ضلع جج راج کمار سنگھ سے ملاقات کی اور وزیر اعظم کے نام عرضداشت سونپا ۔ اس موقع پر سابق پی پی شیام کشور پردھان ، ستہ نرائن یادو ، جی پی مہیش کمار، سینئر ایڈوکیٹ جتندر نرائن جھا ، وجے نرائن چودھری ، عبدالمالک خان ، راجیو رنجن ٹھاکر ، ہیمنت کمار ، سدھیر کمار چودھری ، انیل کمار مشر وغیرہ موجود تھے ۔ مطالبات کی حمایت میں دربھنگہ کے وکلاء قلم بند ہڑتال کریں گے اور کام کاج کا بائیکاٹ کریں گے ۔

About the author

Taasir Newspaper