ہندستان ہندوستان

راجیو کمار اور کنال گھوش سے پوچھ گچھ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 11-February-2019

کولکاتہ / شیلانگ، (ایجنسی): سپریم کورٹ کی ہدایت پر شیلانگ پہنچے کولکاتہ پولیس کمشنر راجیو کمار اور سمن پر ترنمول کانگریس کے لیڈر کنال گھوش سے دارالحکومت شیلانگ کے پولیس بازار واقع سی بی آئی کے دفتر میں اتوار کی صبح 10.30 بجے سے دونوں کے ساتھ پوچھ گچھ شروع ہو گئی ہے۔ سی بی آئی کی ٹیم دونوں کو آمنے سامنے بٹھا کر پوچھ گچھ کی گئی۔ واضح رہے کہ راجیو کمار سے سی بی آئی کی ٹیم ہفتہ کی شام 07 بجے تک تقریبا 08 گھنٹے تک مسلسل پوچھ گچھ کی تھی۔واضح رہے کہ کنال گھوش سپریم کورٹ کی ہدایت پر ہفتہ کو شیلانگ پہنچ گئے تھے۔ جبکہ ٹی ایم سی کے رہنما کنال گھوش شاردا چٹ فنڈ گھوٹالے کے ایک اہم ملزم ہیں۔ اس معاملے میں وہ جیل بھی جا چکے ہیں۔ فی الحال سی بی آئی کے دفتر میں دونوں سے پوچھ گچھ شروع جاری ہے۔ چٹ فنڈ گھوٹالہ معاملے میں ثبوتوں کو مٹانے کے ملزم کولکاتہ پولیس کمشنر راجیو کمار سے دوسرے دن یعنی اتوار کو بھی پوچھ گچھ کے لئے دہلی سے شیلانگ سی بی آئی کی خصوصی ٹیم پہنچی ہے۔ یہ ٹیم ہفتہ دوپہر ہی شیلانگ پہنچ گئی تھی لیکن وہاں راجیو کمار سے پہلے پوچھ گچھ ہو رہی تھی تو ان افسران کو شیلانگ میں ایک ریستوران میں ٹھہرایا گیا تھا۔ سی جی او کمپلیکس میں حکام سے ملاقات اور کچھ دستاویزات کو لے کر یہ لوگ شیلانگ کے لئے روانہ ہو گئے تھے۔ یہاں غور کرنے والی بات یہ ہے کہ کنال گھوش شاردا چٹ فنڈ گروپ کے میڈیا کے کاروبار سربراہ تھے اور شاردا گروپ سے جڑنے سے قبل مغربی بنگال کے ایک بڑے مقامی چینل سے منسلک ہوئے تھے۔لہذا ریاست میں حکمران پارٹی نے ترنمول کانگریس کی سربراہ ممتا بنرجی سمیت پارٹی کے کئی رہنماؤں تک ان کی گہری رسائی تھی اور چٹ فنڈ گھوٹالہ معاملے میں جیل کی سزا کاٹ چکے ہیں۔ فی الحال وہ ضمانت پر رہا ہیں اور انہیں اسی شرط پر ضمانت ملی ہے کہ سی بی آئی جب بھی بلائے انہیں پوچھ گچھ کے لئے جانا ہو گا۔ تو جب جمعرات کو سی بی آئی کی ٹیم نے 10 فروری کو شیلانگ دفتر میں حاضر ہونے کے لئے سمن بھیجا تھا تو وہ فوری طور پر شیلانگ میں پوچھ گچھ کے لئے حاضر ہونے پر رضا مند ہو گئے تھے اور ایک دن پہلے یعنی ہفتہ نو فروری کو ہی شیلانگ جا پہنچے تھے۔چل رہے سی بی آئی کیس کے درمیان سامنے آئے ایک اسٹنگ آپریشن میں انہوں نے یہ بھی دعوی کیا ہے کہ راجیو کمار نے اپنے اسٹائل میں تمام ثبوتوں کو مٹایا ہے۔ اس کے علاوہ پہلے بھی کئی راز انہوں سی بی آئی کے سامنے کھول دیا ہے جسے لے کر راجیو کمار سے بھی سوال کئے جانے ہیں۔ اس لئے دونوں کو آمنے سامنے بٹھا کر پوچھ گچھ کرنے پر کچھ اہم معلومات سامنے آ سکتی ہیں، ایسا سی بی آئی مان کر چل رہی ہے۔ غور طلب ہو کہ سپریم کورٹ کی ہدایت کے مطابق سی بی آئی نے نو فروری ہفتہ کو ہی راجیو کمار سے پوچھ گچھ شروع کی ہے۔پہلے دن صبح 11 بجے سے 8:30 گھنٹے تک پوچھ گچھ ہوئی تھی.صبح 11 بجے سے لے کر رات 7:30 بجے تک راجیو کمار سے میراتھن سوالات کئے گئے تھے۔ اگرچہ سی بی آئی کا دعوی ہے کہ کمار پوچھ گچھ میں تعاون نہیں کر رہے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی سوالوں کے جواب بھی انہوں نے تسلی بخش نہیں دیا۔ واضح رہے کہ گذشتہ تین فروری کو سی بی آئی کی 20 سے 25 رکنی ٹیم کولکاتا کے لاوڈن ا سٹریٹ واقع پولیس کمشنر راجیو کمار کے گھر جا پہنچی تھی لیکن انہیں کمار کے گھر میں نہیں گھسنے دیا گیا اور کولکاتہ پولیس کے حکام کو گرفتار کرلیا تھا۔اس کے بعد سی بی آئی ،ممتا بنرجی اور مرکز کے درمیان دو دنوں تک تنازعہ جاری رہا ۔سپریم کورٹ کی مداخلت کے بعد ہی معاملہ سلجھ سکا ہے ۔سپریم کورٹ کی ہدایت کے بعد ہی سی بی آئی کی پوچھ گچھ جاری ہے ۔

About the author

Taasir Newspaper