ہندستان ہندوستان

سیوان میں احمد غنی پرائیویٹ یونیورسٹی کا قیام جلد

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 11-February-2019

سیوان (نمائندہ):بانی خدابخش لائبریری پٹنہ خان بہادر خدابخش خان کی نگری سیوان کے لکچھمی نگر میں بہت جلد احمد غنی پرائیویٹ یونیورسٹی قائم ہوگی۔سیوان ضلع میں اقلیتوں کےد رمیان تعلیمی بیداری کے لیے غنی میموریل ٹرسٹ کارہائے نمایاں انجام دے رہا ہے ۔مسلمانوں کے درمیان عصری اور دینی تعلیم کے فروغ کےلیے غنی میموریل ٹرسٹ پر عزم ہے ۔آج سیوان کے لکچھمی نگر میں میموریل ٹرسٹ کے چیر مین ظفر احمد غنی نے اعلان کیا کہ جلد ہی احمد غنی پرائیویٹ یونیورسٹی کا قیام اسی جگہ عمل میں آئے گا ۔انہوں نے 20 ایکڑ زمین جو اپنے اور اپنے اہل وعیال کے نام خریدی تھی ٹرسٹ کو وقف کر دیا ہے۔ 10 ایکٹر زمین پر پرشکوہ عمارت تعمیرہوگئی ہے اور مزید 10ا یکڑ میں بھی تعمیری کام کا آغاز ہوچکا ہے۔ ایک پروقار تقریب میں بہار کی معروف علمی ورحانی شخصیت پروفیسر سید شمیم منعمی نے دوسری عمارت کا سنگ بنیاد رکھا۔انہوں نے دعائیہ مجلس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ظفر غنی صاحب ملت میں تعمیری بیداری کےلیے جو کارہائے نمایاں انجام دے رہے ہیں وہ قابل قدر ہیں ۔میں 2سال قبل یہاں حاضر ہواتھا اور اس کی ایک عمارت کا سنگ بنیاد رکھاتھا، اللہ کا کرم ہے کہ پرشکوہ عمارت تعمیر ہوگئی ہے ۔دوسری توسیعی عمارت میں پیشہ ورانہ تعلیم کا نظم ہوگا ۔ظفرغنی کے اس کار خیر کو رب کریم شرف قبولیت بخشے ۔غنی میوریل ٹرسٹ کے صدر ظفر احمد غنی نے کہا کہ انٹرنیشنل ویمبیلی اسکول سیوان پوری ریاست اور ملک کا انفرادی اسکول ہوگا۔جہاں معیاری تعلیم دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ان کا مقصد تعلیمی ماحول قائم کر کے سماج اور ملت کے نونہالوںکو اچھی تربیت کے ساتھ معیاری تعلیم دینا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلی جو عمارت بن گئی ہے اس میں باضابطہ پڑھائی آج سے شروع ہوجائے گی۔انہوں نے کہا کہ وہ مسلمانوں کی تعلیمی حقوق اور ان کے تحفظ کے لیے پابند عہد ہیں ۔اپنے والد محترم احمد غنی کے بارے میں تفصیل سے بتاتے ہوئے کہا کہ انہوں نےاس علاقے میں تعلیمی پسماندگی کے خاتمے کےلیے جو کارہائے نمایاں انجام دئے ہیں وہ اظہر من الشمش ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ ذکیہ آفاق اسلامیہ کالج کا اقلیتی کردار ختم کرکے اپنے ذاتی مفاد کی تکمیل چاہتے ہیں لیکن میرے جیتے جی ایسا کبھی نہیں ہوگا ،انہوں نے کہا کہ میں انسان ہوں انسان سے غلطی ہوسکتی ہے اگر کسی کو کوئی شکایت ہو تو وہ مجھ سے براہ راست ملے۔ان کی شکایت کا ازالہ کروں گا۔قابل ذکر ہے کہ ملت کے بدخواہوں اور سرکاری افسروں اور یونیورسٹیوں کے افسران کی بےجا مداخلت کے سبب تعلیمی نظام میں گربڑی پیدا ہورہی تھی اس کےلیے انہوں نے کئی سال قبل سپریم کورٹ اور ہائی کورٹ کا مسلسل دروازہ کھٹکھٹانے کے بعد کامیابی حاصل کی ۔اور اب ذکیہ آفاق اسلامیہ کالج سیوان بہار کا معروف مسلم کالج ہے ۔جہاں پوسٹ گریجویٹ تک کی تعلیم کا مکمل نظم ہے ۔کالج کا اپنا ہاسٹل بھی ہے۔ ظفر غنی نے اعلان کیا کہ احمد غنی یونیورسٹی کےقیام کےلیے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جس کا کنوینر علامہ اقبال کالج بہار شریف کے سکریٹری شاہ جاویدی کو بنایا گیا ہے۔جبکہ پٹنہ ہائی کورٹ کےایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سید خورشید عالم ،محکمہ داخلہ کے سابق ڈپٹی سکریٹری اور معروف ملی وسماجی رہنما شمیم اختر ،صغریٰ کالج بہار شریف کے سکریٹری ذاکر حسین اور الحفیظ کالج آرا کے سکریٹری شاہ علیم ،کمیٹی کے رکن بنائے گئے ہیں ۔یہ تمام حضرات ملت کا درد رکھتے ہیں اور ملت کو جدید تعلیم سے آراستہ اور پیراستہ کرانے کےلیے ہمہ تن مصروف ہیں ۔جلد ہی یہ لوگ اپنے رپورٹ سپرد کریں گے اس کی روشنی میں آگے کی کاروائی کی جائے گی۔افتتاحی اور سنگ بنیاد کی تقریب میں بہار کی اہم شخصیتوں نے شرکت کی جن میںبہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کے چیر مین عبدا لقیوم انصاری ،بہار ریاستی شعیہ وقف بورڈ کے چیر مین ارشاد علی آزاد ،بہار ریاسنی وقف بورڈ کے چیر مین محمد ارشاد اللہ ،سینئر صحافی اور عوامی اردو نفاذ کمیٹی بہار کے سربراہ اشرف استھانوی ، ڈاکٹر سید شہباز،ڈاکٹر ریحان غنی ،احمد جاوید،جاوید اختر، محمد نوشاد ،مدرسہ وارث العلوم چھپرہ کے سکریٹری علی اختر ،فیصل انور ،پٹنہ ہائی کورٹ کے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سید خورشید عالم کے نام قابل ذکر ہیں ۔

About the author

Taasir Newspaper