ریاست

مرکزی وزیر نے مشرقی چمپارن میں 2540 کروڑ کے منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھا

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-February-2019

موتیہاری، (محمداکرم)مرکزی وزیر بڑائے روڈ ٹرانسپورٹ اور شاہراہ،شیپینگ،آبی وسائل، ریور ڈیولپمنٹ اور گنگا تحفظ نیتن گڈکری نے مشرقی چمپارن کے سرحدی علاقہ رکسول و موتیہاری میں 2540 کروڑ کی لاگت سے بننے والے تین منصوبوں کا بنیاد رکھا۔جس میں قومی شاہراہ نمبر 227A سیوان،کیسریا،چکیا تک 83.24 کیلومیٹر تک لمبائی کی چار/دولین پیبڈ سولڈر سمیت چورائی کی ہے جس کی لاگت 1285 کروڑ ہے.دوسرا منصوبہ قومی شاہراہ موجودہ ایس ایچ 74کے مانک پور،صاحب گنج،کیسریا،اریراج تک 81.11 سڑک کی چوڑی کرن کی لاگت 1254 کروڑ اور تیسرا منصوبہ مشرقی چمپارن کی قومی شاہراہ نمبر 28 اور28 Aکی لاگت93.91 ہے۔ وہیں دوسری جانب موتیہاری کے گاندھی میدان میں منعقد سہ روزہ کمبھ میلا سے خطاب کرتے مرکزی وزیر بڑائے روڈ ٹرانسپورٹ اور شاہراہ،شیپینگ،آبی وسائل،ریورڈیولپمنٹ اور گنگا تحفظ نیتن گڈکری نے کہا کہ مرکزی وزیر زراعت رادھا موہن سنگھ نے وزیراعظم نریندر مودی کی قیادت میں تاریخی کام کیا ہے جس سے کسانوں کی آمدنی میں ایم ایس پی کے ذریعے دوگنا ہوا ہے،گاڑیوں کی کمپنی سے بات کرکے ہماری سرکار نے یہ پہل کی ہے جس سے کسان کے اتھینال سے چلنے والے جلد ہی دو پہیہ اور تین پیہہ گاڑی بازار میں آنے والا ہے۔ جلد ہی پانی پر اترنے والے جہاز ملک میں شروع ہوں گے.جس سے آپ ملک کے کسی بھی جگہ سے موتیہاری شہر کے موتی جھیل میں اترسکتے ہیں.ڈمریا گھاٹ پر فلوٹینگ ٹرمینل بنائیں اور یہ کام اسی سال میں پورا کرلیا جائے گا.انہوں نے مزید کہا کہ موتیہاری کو جلدہی بین الاقوامی سطح پر فروغ دیا جائے گا.جس سے موتیہاری کے راستے بہتر ہوں گے.ٹیکنالوجی اور ریسرچ سے تصویر بدل سکتی ہے اس کے لئے کسانوں کو ٹیکنالوجی کے ساتھ جُڑنا ضروری ہے۔ وہیں مرکزی وزیر زراعت رادھاموہن سنگھ نے کہا کہ اسی سرزمین پر سو سال قبل باپو آئے تھے اور ستیہ گرہ کی شروعات کرملک کو آزادی دلائی.باپو دھام ریلوے اسٹیشن کو بہتر طریقے سے سنوارا گیاہے ساتھ ہی دیگر چھوٹے بڑے اسٹیشنوں کو بہتر بنایا گیا ہے۔باپو کی یاد تازہ رکھنے کے لئے چرکھا بنایا گیا۔مودی حکومت نے چمپارن کو سنٹرل یونیورسٹی دے کر تاریخ رقم کی ہے۔اس موقع پر پانچ خواتین کو وزیراعظم اجل منصوبہ کے تحت مفت گیس کنیکشن دیا گیا.ضلع میں اس منصوبہ سے تین لاکھ 74 خواتین کو اس منصوبہ سے جوڑا گیا ہے۔ موقع پر ریاستی وزیر سیاحت پرمود کمار،وائس چانسلر راجندر زرعی یونیورسٹی،کوآپریٹووزیر رانا رندھیر سنگھ،بتیا ایم پی ڈاکٹر سنجیے جیسوال،کلیانپور ایم ایل اے سچیندر سنگھ،ایم ایل اے شیام بابو یادو،ایم ایل سی ببلوگپتا،پری ینکا جیسوال سمیت دیگر لیڈران موجود تھے۔

About the author

Taasir Newspaper